یو پی میں مودی کی ریلی کے لیے 2000 بس کے انتظام کا حکم، کانگریس نے پوچھا ’مہاجر مزدوروں کے لیے کیوں نہیں کیا تھا انتظام؟‘

پی ایم مودی کے پروگرام کے لیے 2000 بسیں جمع کرنے کا حکم دیا گیا ہے، سرکاری مشینری کے اس غلط استعمال پر کانگریس نے پوچھا ہے کہ آخر مہاجر مزدوروں کے لیے بسوں کا انتظام کرتے وقت حکومت کہاں تھی؟

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

وشو دیپک

وزیر اعظم نریندر مودی 16 نومبر کو پوروانچل ایکسپریس وے کا افتتاح کرنے والے ہیں۔ اس انعقاد کو کامیاب بنانے کے لیے سرکاری حکم آیا ہے کہ اس کے لیے 2000 بسوں کا انتظام کیا جائے جو لوگوں کو مودی کے پروگرام میں شامل ہونے کے لیے لے کر جائیں گی۔

اس تعلق سے اتر پردیش ٹرانسپورٹ کارپوریشن کے منیجنگ ڈائریکٹر کو سلطان پور ضلع مجسٹریٹ نے خط بھیجا ہے۔ خط میں کہا گیا ہے کہ اس پروگرام میں 2000 بسوں کا انتظام کیا جانا ہے جو لوگوں کو پروگرام کی جگہ پر لے جائیں گی۔ ان میں سے 70 فیصد بسوں کا انتظام سلطان پور سے ہوگا اور باقی 30 فیصد بسیں پڑوسی اضلاع امبیڈکر نگر اور ایودھیا سے آئیں گی۔ سلطان پور ضلع مجسٹریٹ نے 6 نومبر 2021 کو لکھے اس خط میں کہا ہے کہ ان بسوں کا خرچ اتر پردیش ایکسپریس وے صنعتی ڈیولپمنٹ اتھارٹی (یو پی ای آئی ڈی اے) اٹھائے گا۔

یو پی میں مودی کی ریلی کے لیے 2000 بس کے انتظام کا حکم، کانگریس نے پوچھا ’مہاجر مزدوروں کے لیے کیوں نہیں کیا تھا انتظام؟‘

غور طلب ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی 16 نومبر کو پوروانچل ایکسپریس وے کا افتتاح کریں گے۔ اصل پروگرام سلطان پور میں ہوگا۔ اس ایکسپریس وے کی لمبائی 340.824 کلو میٹر ہے۔ اس سلسلے میں سلطان پور کے ضلع مجسٹریٹ نے ’نیشنل ہیرالڈ‘ سے بات چیت میں اعتراف کیا کہ ایسا خط لکھا ہے جس میں 2000 بسوں کا انتظام کرنے کی بات ہے۔ حالانکہ انھوں نے کہا کہ ’’اس پر سیاست نہیں ہونی چاہیے، کیونکہ پروگرام میں بہت سے لوگ شامل ہیں۔ ہمیں نظامِ قانون بنائے رکھنے کے لیے بسوں کا انتظام کرنے کو کہا گیا ہے۔‘‘

اپوزیشن نے آئندہ سال ہونے والے اسمبلی انتخاب سے عین قبل پوروانچل ایکسپریس وے کے افتتاح کو سیاسی اسٹنٹ قرار دیا ہے۔ اتر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر اجے کمار للو نے کہا کہ یوگی حکومت بھیڑ جمع کرنے کے لیے سرکاری مشینری کا غلط استعمال کر رہی ہے تاکہ مودی خوش ہو سکیں۔ انھوں نے کہا کہ ’’یہ غیر اخلاقی اور عوام مخالف ہے۔ یوگی حکومت اس وقت کیا کر رہی تھی جب ہزاروں مہاجر مزدور پیدل اپنے گھروں کو جا رہے تھے۔ اس وقت کانگریس نے مزدوروں کے لیے بسوں کا انتظام کیا تھا۔‘‘


اتر پردیش میں کانگریس اقلیتی سیل کے صدر شاہنواز عالم نے کہا کہ ’’ضلع مجسٹریٹس کو سرکاری خط بھیج کر مودی کے پروگرام کے لیے بھیڑ جمع کرنے کو کہا جا رہا ہے، اس سے یوگی حکومت کی ذہنیت ظاہر ہوتی ہے۔‘‘ انھوں نے مزید کہا کہ ’’یوگی حکومت کے لیے مزدور، غریب لوگ، مہاجر اور اقلیتیں کوئی اہمیت نہیں رکھتیں۔ انھیں تو صرف میدان بھرنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔‘‘

واضح رہے کہ پوروانچل ایکسپریس وے لکھنؤ سے شروع ہو کر مشرقی اتر پردیش میں غازی پور تک جاتا ہے۔ یہ ایکسپریس وے وارانسی، ایودھیا، گورکھپور اور الٰہ آباد (اب پریاگ راج) سمیت 9 اضلاع سے ہو کر گزرتا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔