بارش سے بے حال تمل ناڈو سنبھلنے کے لیے کوشاں، لیکن محکمہ موسمیات نے سنائی بری خبر

آئی ایم ڈی کی مزید بارش سے متعلق پیشین گوئی کو دیکھتے ہوئے فائر بریگیڈ، پولیس، ہیلتھ سمیت آفات اور بچاؤ اہلکاروں نے کسی بھی حالت سے نمٹنے کے لیے کمر کس لی ہے۔

تمل ناڈو میں سیلاب کی صورت حال
تمل ناڈو میں سیلاب کی صورت حال
user

قومی آوازبیورو

تمل ناڈو کی راجدھانی چنئی اور اس کے آس پاس کے اضلاع میں حال ہی میں زبردست بارش کے قہر کے بعد حالات ابھی معمول پر آئے بھی نہیں ہیں، اور محکمہ موسمیات نے بدھ و جمعرات کو زبردست بارش کی پیشین گوئی کر دی ہے۔ آئی ایم ڈی نے جمعرات کو چنئی اور اس سے ملحق اضلاع ترووَلور، کانچی پورم اور چینگل پٹو کے لیے ریڈ الرٹ جاری کیا ہے اور ان علاقوں میں زبردست بارش کا امکان ہے۔ آئی ایم ڈی نے متنبہ کیا ہے کہ زیادہ زوردار بارش سے کچھ مقامات پر 20.4 سنٹی میٹر تک بارش ہو سکتی ہے۔

آئی ایم ڈی نے متنبہ کیا ہے کہ خلیج بنگال کے اوپر ایک کم دباؤ کا علاقہ ایک گردابی گھماؤ کے ساتھ بارش لانے والے علاقہ میں بنا ہوا ہے۔ یہ مغرب کی جانب بڑھ سکتا ہے اور مغرب وسطیٰ اور جنوب مغربی خلیج بنگال تک پہنچ سکتا ہے۔ اس سے جمعرات کو جنوبی آندھرا پردیش اور شمالی تمل ناڈو کے ساحلوں پر بارش ہو سکتی ہے۔


اس درمیان چنئی اور اس کے آس پاس کے اضلاع میں بدھ کی دوپہر کو متوسط سے زوردار بارش ہوئی اور آسمان میں بادل چھائے رہے۔ ایک نجی فرم میں آئی ٹی پیشہ ور سرون کمار نے بتایا کہ ’’ہم دھیرے دھیرے پہلے کی بارش سے سنبھل رہے ہیں اور اڈیار میں میرا پڑوس اب بھی پانی سے بھرا ہوا ہے۔ آج دوپہر سے آسمان میں بادل چھائے ہوئے ہیں اور یہاں تاریکی ہے۔ چنئی اور آس پاس کے علاقوں میں مزید ایک بار زوردار بارش ہو سکتی ہے۔‘‘

آئی ایم ڈی نے یہ بھی پیشین گوئی کی ہے کہ بدھ کی رات تک چنئی اور آس پاس کے اضلاع کے کچھ حصوں میں زوردار سے انتہائی زوردار بارش ہو سکتی ہے، اور پڈوچیری تک پھیل سکتی ہے۔ اسے دیکھتے ہوئے فائر بریگیڈ، راحت رسانی اہلکاروں، پولیس، محکمہ صحت، این ڈی آر ایف اور ایس ڈی آر ایف نے کسی بھی حالت سے نمٹنے ک لیے کمر کس لی ہے۔ وزیر اعلیٰ ایم کے اسٹالن نے چنئی کے آس پاس کے علاقوں میں زمینی سطح کی حالت کا پتہ لگانے کے لیے چیف سکریٹری سمیت سینئر افسران کی ایک میٹنگ کی صدارت کی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔