راہل گاندھی کی بہار کانگریس رہنماؤں کے ساتھ آن لائن میٹنگ، انتخابی تیاریوں پر تبادلہ خیال

راہل گاندھی نے کہا کہ بہار میں تبدیلی کے لئے حکومت مخالف تمام قوتیں یکجا ہو کر لڑائی لڑیں اور ایک نئی حکومت تشکیل دیں، جس سے بہار کے عوام سکون کی زندگی گزار سکیں۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے بہار کانگریس مشاورتی کمیٹی کے تمام ارکان سے اس سال کے آخر میں ہونے والے اسمبلی انتخابات کے حوالہ سے آن لائن میٹنگ کی۔ میٹنگ کے دوران راہل گاندھی کو کانگریس رہنماؤں نے حالات سے آگاہ کرایا اور ان سے ضروری ہدایات حاصل کیں۔

گزشتہ روز ہونے والے اس آن لائن اجلاس میں راہل گاندھی نے بہار کانگریس کے رہنماؤں سے کہا کہ بہار کے عوام موجودہ حکومت کی پالیسیوں سے عاجز اور کاموں سے مکمل طور پر غیر مطمئن ہیں، وہ ریاست میں تبدیلی کے خواہاں ہیں۔ انہوں نے کہا، ’’اسی تبدیلی کے لئے حکومت مخالف تمام قوتیں یکجا ہو کر لڑائی لڑیں اور ایک نئی حکومت تشکیل دیں، جس سے بہار کے عوام سکون کی زندگی گزار سکیں۔‘‘

راہل گاندھی نے کہا، ’’بہار روایتی اور سماجی طور پر ایک عظیم ریاست رہی ہے۔ حلات اور طویل مدت کی ناقص حکمرانی کے سبب یہ آج ترقی کی راہ میں پسماندہ نظر آتی ہے۔ ایسے حالات میں ایک ذہنیت اور خیالات والے لوگوں کو ایک صف میں جمع ہو کر ریاست کے عوام کے حق میں کام کرنا پڑے گا۔‘‘

میٹنگ میں موجود مشاورتی کمیٹی کے ارکان نے ایک آواز میں کہا کہ عظیم اتحاد کا خاکہ جتنی جلد طے ہوگا بہار اور پارٹی کے حق میں اتنا ہی بہتر ہوگا۔ اس اثنا میں یکے بعد دیگرے تمام رہنماؤں نے راہل گاندھی کے سامنے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ راہل گاندھی نے سبھی کو تسلی کے ساتھ سنا۔

بہار پردیش کمیٹی کے ترجمان راجیش راٹھور نے بتایا کہ راہل گاندھی کے ساتھ میٹنگ میں کانگریس جنرل سکریٹری معاون انچارج تنظیم کے سی وینو گوپال، بہار انچارج اور رکن راجیہ سبھا شکتی سنگھ گوہل، انچارج سکریٹری ویریندر سنگھ راٹھور اور اجے کپور، ریاستی کانگریس کے صدر ڈاکٹر مدن موہن جھا، کانگریس بہار قانون ساز کونسل کے قائد سدانند سنگھ، کارگزار صدر ڈاکٹر اشوک کمار، کوکب قادری، ڈاکٹر سمیر کمار سنگھ اور شیام سندر سنگھ دھیرج سمیت کئی رہنما شامل ہوئے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔