حج 2022 مہنگا اور ڈیجٹل، 20 ہزار درخواستیں وصول، صرف 10 مقامات سے روانگی

آئندہ حج کے سلسلہ میں عہدیداران سے ایک میٹنگ کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مختار عباس نقوی نے کہا کہ عازمین حج خود آن لائن درخواستیں دے رہے ہیں اور بیشتر موبائل کا استعمال کر رہے ہیں۔

مختار عباس نقوی، تصویر یو این آئی
مختار عباس نقوی، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

ممبئی: آج یہاں جنوبی ممبئی میں واقع حج ہاؤس میں مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور اور ڈپٹی لیڈر راجیہ سبھا مختار عباس نقوی نے حج 2022 کے متعلق ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مطلع کیا کہ یکم نومبرسے درخواستوں کی وصولیابی کے بعد سے ان 25 دنوں میں 20 ہزار درخواستیں ملی ہیں، جبکہ حج مکمل طور پر ڈیجٹل ہو چکا ہے۔ آئندہ حج کے سلسلہ میں عہدیداران سے ایک میٹنگ کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے نقوی نے مزید کہا کہ عازمین حج خود آن لائن درخواستیں دے رہے ہیں اور وہ بھی موبائل کا استعمال کر رہے ہیں۔

مرکزی وزیر نے کہا کہ اس مرتبہ سے موبائل ایپ پر بھی درخواست دینے کی سہولت فراہم کی گئی ہے اور اس کا بھرپور فائدہ اٹھایا جا رہا ہے، اور ملک بھر کے وقف دفاتر میں بھی درخواستیں دی جا سکتی ہیں۔ حالانکہ اس حج سیزن میں ملک بھر سے صرف 10 مقامات سے حجاج کرام فریضہ حج کے لیے روانہ ہوں گے۔


مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور نے کہا کہ گزشتہ 7 برسوں میں ہندوستان سے حج سفر کے انتظامات میں اہم اصلاحات اور سہولیات کی فراہمی سے حج کے عمل کو بے حد آسان بنایا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس عرصے میں حج سبسڈی ختم کرنے، بغیر محرم کے حج کی پابندی ہٹائے جانے کے ساتھ ساتھ حج کو مکمل طور پر ڈیجٹل کرنے جیسی اصلاحات سے ’ایز آف ڈوئنگ حج‘ کو قوت حاصل ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ کورونا وباء کی وجہ سے دوسال سے سعودی عرب نے بیرونی ملک کے حجاج کرام پر پابندی عائد کی ہوئی ہے، لیکن حج 2022 سے حج حسب معمول ہونے کے امکانات ہیں۔ اس کے پیش نظر حج کمیٹی آف کمیٹی نے حج 2022 کی تفصیل پیش کی اور وزیر موصوف نے امید ظاہر کی کہ ماضی کی طرح اس مرتبہ بھی حج پرامن اور بہتر انداز میں تکمیل کو پہنچے گا۔


مرکزی وزیر نقوی نے مزید کہا کہ مستقبل میں حج نئی اصطلاحات اور سہولیات کے ساتھ ہوگا۔ بلکہ صد فی صد ڈیجیٹل اور آن لائن ہوگا اور درخواستیں حج موبائل ایپ سے بھی کی جا سکیں گی۔ آن لائن درخواست دینے کا عمل شروع ہو چکا ہے۔ آخری تاریخ 31 جنوری 2022 رکھی گئی ہے۔ اب تک 20 ہزار درخواستیں موصول ہوئی ہیں۔

مختار عباس نقوی نے کہا کہ اس بار ہندوستانی عازمین حج بھی ’ووکل فار لوکل‘ کی حوصلہ افزائی کریں گے اور سودیشی سامان کے ساتھ عازمین حج سفر حج پر روانہ ہوں گے۔ اس سے قبل چادر، تکئے، تولئے، چھتری اور دیگر سامان عازمین حج غیر ملکی زر مبادلہ میں سعودی عرب میں خریدتے تھے۔ اس بار مذکورہ اشیاء ہندوستانی رقم میں ہندوستان میں ہی خرید سکیں گے، جو کہ نصف قیمت میں دستیاب ہے۔جو روانگی کے مراکز پر تقسیم کیے جائیں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔