خوشخبری! گہلوت حکومت 43 لاکھ بے روزگاروں کو دے گی 2 مہینے کا ’مفت راشن‘

لاک ڈاؤن کے دوران بے روزگار ہوئے لوگوں کو راجستھان حکومت نے راحت پہنچانے کے مقصد سے انھیں مفت راشن تقسیم کرنے کا فیصلہ لیا ہے۔ حکومت کا کہنا ہے کہ بطور راشن گیہوں اور چنا تقسیم کیا جائے گا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

کورونا بحران کے درمیان ایک طرف جہاں بی جے پی حکمراں ریاستوں میں غریب و بے روزگار لگاتار مسائل کا سامنا کر رہے ہیں، وہیں کانگریس حکمراں ریاستوں میں انھیں راحت پہنچانے کے لیے اقدام کیے جا رہے ہیں۔ اسی کے تحت راجستھان کی گہلوت حکومت نے ایک بڑا قدم اٹھاتے ہوئے 43 لاکھ لوگوں کے درمیان 2 مہینے کا راشن مفت تقسیم کرنے کا اعلان کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق 12، 13 اور 14 جون کو منصوبہ بند طریقے سے بے روزگاروں کے درمیان راشن کی تقسیم ہوگی۔

دراصل لاک ڈاؤن کے دوران بے روزگار ہوئے لوگوں کو راجستھان حکومت نے راحت پہنچانے کے مقصد سے یہ فیصلہ کیا ہے۔ ریاستی حکومت کا کہنا ہے کہ راشن میں گیہوں اور چنا لوگوں میں تقسیم کیا جائے گا۔ مفت گیہوں اور چنے کی تقسیم 12 جون سے شروع ہو جائے گی۔ اس کا فائدہ فوڈ سیکورٹی منصوبوں سے محروم ریاست کے 43 لاکھ لوگوں کو ملے گا اور ریاستی انتظامیہ نے اس سلسلے میں سبھی تیاریاں مکمل کر لی ہیں۔

راجستھان کے وزیر رمیش چند مینا نے اس سلسلے میں بتایا کہ لاک ڈاؤن کے دوران کاروبار پوری طرح سے ٹھپ ہو گئے ہیں جس کی وجہ سے لاکھوں لوگ وقتی طور پر بے روزگار ہو گئے۔ ایسے میں متاثرہ لوگوں کی مدد کے لیے ریاستی حکومت نے مزدور خاندانوں کے 37 درجات مقرر کیے اور ان کا سروے کرایا گیا۔ سروے کا کام مکمل ہو گیا ہے اور اس سروے کی بنیاد پر ریاست میں اسپیشل کیٹگری کے نان این ایف ایس اے افراد کی تعداد تقریباً 43 لاکھ ہے۔ ان کیٹگریز کے اہل اشخاص کو دو ماہ کے لیے گیہوں اور چنے مفت دیئے جائیں گے۔ اسپیشل کیٹگریز کے ان افراد کو مئی اور جون ماہ کے لیے فی کس 5 کلو گیہوں اور فی خاندان 1 کلو چنا ماہانہ کے حساب سے مفت دیا جائے گا۔

مزید جانکاری دیتے ہوئے رمیش چند مینا نے بتایا کہ سروے کے مطابق راشن کی تقسیم دکانوں سے کی جائے گی اور اس کے ساتھ ہی ہر دکان پر دو سرکاری ملازمین کی موجودگی میں گیہوں اور چنے کی تقسیم ہوگی۔ مینا نے بتایا کہ گیہوں اور چنے کے سبھی نفع کنندگان کو راشن دینے سے پہلے ایس ایم ایس کے ذریعہ مطلع کیا جائے گا۔ ریاست میں گیہوں کی تقسیم کرنے سے پہلے فارم-4 کے بقیہ ڈاٹا میں جن آدھار یا آدھار کی سیڈنگ اور آف لائن سروے کی ای-متر یا موبائل ایپ پر انٹری کرائے جانے کی ہر ممکن کوشش بھی کی جائے گی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next