زرعی قوانین: کسانوں کا ڈر سچ ثابت ہوا، اڈانی نے طے کی ’سیب‘ کی منمانی قیمت!

بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ سال کے مقابلے اس بار فی کلو کے حساب سے سیب کی 16 روپے کم قیمت طے کی گئی ہے، اڈانی ایگری فریش کمپنی 26 اگست سے سیب کی خریداری شروع کر دے گی۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

تنویر

زرعی قوانین کو لے کر کسانوں کا مظاہرہ دہلی بارڈرس سمیت کئی ریاستوں میں بھی جاری ہے، اور گزشتہ سال مودی حکومت کے ذریعہ پاس کردہ ان قوانین سے جس خوف کا اندیشہ کسانوں نے ظاہر کیا تھا، اس کی ایک مثال ہماچل پردیش میں دیکھنے کو مل گئی ہے۔ دراصل سیب کی خرید کرنے ہماچل پہنچی اڈانی ایگری فریش کمپنی سے باغبانوں کو زوردار جھٹکا لگا ہے۔ کمپنی نے سیب کی جو قیمت طے کی ہے، انھیں سن کر باغبانوں کے چہرے فق ہیں اور وہ انتہائی ناراض نظر آ رہے ہیں۔

بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ سال کے مقابلے اس بار فی کلو کے حساب سے سیب کی 16 روپے کم قیمت طے کی گئی ہے۔ کمپنی 26 اگست سے سیب کی خریداری شروع کر دے گی۔ اس درمیان کمپنی نے منگل کو سیب خریداری کے لیے قیمت کا اعلان کیا۔ اڈانی ایگری فریش 80 سے 100 فیصد رنگ والا ایکسٹرا لارج سیب 52 روپے فی کلو، جب کہ لارج، میڈیم اور اسمال سیب 72 روپے فی کلو کی شرح پر خریدے گی۔ گزشتہ سال یہ قیمتیں ایکسٹرا لارج سیب 68 روپے فی کلو، جب کہ لارج، میڈیم اور اسمال سیب 88 روپے فی کلو طے کی گئی تھیں۔ منڈیوں کے بعد اڈانی کے ریٹ بھی کم ہونے سے باغبان ناراض ہیں۔ اس بار 60 سے 80 فیصد رنگ والا ایکسٹرا لارج سیب 37 روپے فی کلو جب کہ لارج، میڈیم اور اسمال سائز کا سیب 57 روپے فی کلو کی قیمت پر خریدا جائے گا۔ 60 فیصد سے کم رنگ والے سیب کی خرید 15 روپے فی کلو کی قیمت پر ہوگی۔ گزشتہ سال ایسا سیب 20 روپے فی کلو خریدا گیا تھا۔


اس طرح دیکھا جائے تو کسانوں کے دل میں جو خوف زرعی قوانین کو لے کر تھی، وہ اب حقیقت کی شکل اختیار کرنے لگا ہے۔ کسان اسی بات کو لے کر مظاہرہ کر رہے ہیں کہ اگر حکومت زرعی قوانین نافذ کر دیتی ہے تو اس سے کسان بڑے کارپوریٹ گھرانوں کے بھروسے رہ جائیں گے۔ کارپوریٹ کی طرف سے کسانوں کو ان کی فصل کی مناسب قیمت نہیں ملے گی۔ اس تعلق سے بھارتیہ کسان یونین لیڈر راکیش ٹکیت نے ایک بیان بھی جاری کیا تھا۔ کسان لیڈر کا وہ اندیشہ ہماچل پردیش میں سچ ثابت ہو رہا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ اڈانی ایگری فریش کے لیے باغبانوں کو اپنا سیب کریٹوں میں اڈانی کے کلیکشن سنٹر تک لانا ہوگا۔ کمپنی نے 26 سے 29 اگست تک کے لیے یہ ریٹ جاری کیے ہیں۔ 29 اگست کے بعد ریٹ میں تبدیلی کی جائے گی۔ ہماچل میں اڈانی گروپ نے ٹھیوگ کے سینج، روہڑ کے میہندلی اور رام پور کے بیتھل میں کلیکشن سنٹر بنایا ہے۔ اڈانی ایگری فریش کے ٹرمینل منیجر پنکج مشرا نے بتایا کہ ’’منڈیوں کے مقابلے اڈانی نے اچھی قیمت طے کی ہے۔ مارکیٹ کا فیڈ بیک لینے کے بعد ہی ریٹ طے کیے گئے ہیں۔ 29 اگست کے بعد مارکیٹ کی حالت کے مطابق ریٹ میں تبدیلی ہوگی۔‘‘


بہر حال، ہماچل پردیش میں سیب کی قیمت اڈانی ایگری فریش کے ذریعہ کم طے کیے جانے کے بعد زرعی معاملوں کے ماہرین نے کسانوں کے مظاہرہ کو درست ٹھہرایا ہے۔ ماہر زراعت دیویندر شرما نے اپنا رد عمل ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’اسی وجہ سے کسان زرعی قوانین کی مخالفت کر رہے ہیں۔ اسی لیے ایم ایس پی کو قانونی جامہ پہنائے جانے کی بات کہی جا رہی ہے۔‘‘

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔