کورونا پروٹوکال کی خلاف ورزی کرنا وبا کو دعوت دینے کے برابر ہے: ضلع مجسٹریٹ سری نگر

اعجاز اسد نے کہا کہ ’کورونا کے کیسز میں اضافہ درج ہو رہا ہے اور ملک میں بھی کورونا کے کیسز میں کافی اضافہ درج ہو رہا ہے لہذا کورونا پروٹوکال پر عمل کرنے کی ضرورت ہے‘۔

سرینگر میں گرم کپڑوں کی خریداری کرتے لوگ / یو این آئی
سرینگر میں گرم کپڑوں کی خریداری کرتے لوگ / یو این آئی
user

یو این آئی

سری نگر: جموں و کشمیر میں کورونا کیسز میں ہو رہے اچانک اضافے کے بیچ ضلع مجسٹریٹ سری نگر محمد اعجاز اسد کا کہنا ہے کہ کورونا پروٹوکال کی خلاف ورزی کرنا ہی اس وبا کو دعوت دینے کے برابر ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس وبا سے گزشتہ دو برسوں سے جوجھ رہے ہیں اور گائیڈ لائنز پر عمل کرنا ہی نجات کا واحد ذریعہ ہے۔

اعجاز اسد کا کہنا تھا کہ کورونا کی اس لہر سے لڑنے کے لئے انتظامیہ پوری طرح سے تیار ہے۔ موصوف نے ان باتوں کا اظہار جمعرات کے روز یہاں میڈیا کے ساتھ بات کرنے کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ ’کورونا کے کیسز میں اضافہ درج ہو رہا ہے اور ملک میں بھی کورونا کے کیسز میں کافی اضافہ درج ہو رہا ہے لہذا کورونا پروٹوکال پر عمل کرنے کی ضرورت ہے‘۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم دو برسوں سے سے اس وبا سے جوجھ رہے ہیں اور کورونا پروٹوکال پر عمل کرنا ہی اس سے نجات کا واحد ذریعہ ہے۔


اعجاز اسد نے کہا کہ اگر کسی علاقے میں ایک آدمی ماسک نہیں لگائے گا تو اس کا خطرہ سارے علاقے کو لاحق ہے۔ کورونا کی اس لہر کا مقابلہ کرنے کے لئے انتظامیہ کی تیاریوں کے بارے میں پوچھے جانے پر انہوں نے کہا کہ ’ضلع کے مختلف اسپتالوں میں ایک درجن نئے آکسیجن پلانٹ نصب کئے گئے ہیں اور ہمارے پاس پانچ سو بستروں والا کووڈ اسپتال بھی ہے‘۔

انہوں نے کہا کہ کورونا مریضوں کی دیکھ ریکھ اور علاج کے لئے ہمارے پاس طبی عملے کی بھی کوئی کمی نہیں ہے۔ قابل ذکر ہے کہ جموں وکشمیر میں کورونا کے یومیہ کیسز میں غیر معمولی اضافے کے بیچ انتظامیہ نائٹ کرفیو کے نفاذ پر سنجیدگی کے ساتھ غور و غوض کر رہی ہے، جبکہ حکام نے صوبے جموں میں میڈیکل اسٹاف کی چھٹیاں منسوخ کر دی ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔