اتر پردیش حکومت بہن بیٹیوں کی سلامتی یقینی بنائے: مایاوتی

مایاوتی نے منگل کے روز ٹوئٹ کرکے کہا کہ ریاستی حکومت خواتین کی حفاظت کے تئیں لاتعلق بنی ہوئی ہے۔ بہن بیٹیوں کی حفاظت حکومت کی پالیسی میں شامل نہیں ہے۔

بی ایس پی صدر مایاوتی
بی ایس پی صدر مایاوتی
user

یو این آئی

نئی دہلی: بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کی صدر مایاوتی نے اترپردیش کے کانپور میں گرلز شیلٹر ہوم کے واقعہ کے لئے ریاستی حکومت پر سخت تنقید کرتے ہوئے کہا کہ پورے معاملے کی غیر جانبدارانہ جانچ کرا کر قصورواروں کے خلاف سخت کارروائی کی جانی چاہیے۔ مایاوتی نے منگل کے روز ٹوئٹ کرکے کہا کہ ریاستی حکومت خواتین کی حفاظت کے تئیں لاتعلق بنی ہوئی ہے۔ بہن بیٹیوں کی حفاظت حکومت کی پالیسی میں شامل نہیں ہے۔

انہوں نے کہا ’’بی ایس پی کا مطالبہ ہے کہ ریاستی حکومت کانپور گرلز شیلٹر ہوم کے واقعہ پر پردہ نہ ڈالے بلکہ اس کو سنجیدگی سے لے اور اس کی اعلی سطحی غیر جانبدارانہ جانچ کرا کر قصورواروں کے خلاف سخت کارروائی کرے۔ ساتھ ہی ریاست کے سبھی گرلز شیلٹر ہوم کے انتظام میں بلا تاخیر ضروری اصلاحات لائی جائیں تو بہتر ہے‘‘۔

مایاوتی نے الزام لگایا کہ کانپور سرکاری شیلٹر ہوم میں کافی ساری بہن بیٹیوں کے کورونا سے متاثر اور حاملہ ہونے کی خبرسنسنی خیز اور باعث تشویش ہے اور یہ واقعہ پھر سے ثابت کرتا ہے کہ اترپردیش میں خواتین کا احترام تو دور کی بات ان کی حفاظت کے معاملے میں حکومت غیر ذمہ دار اور لا پرواہ بنی ہوئی ہے۔

بی ایس پی نے کہا کہ اس سے قبل اعظم گڑھ میں دلت بیٹی کے ساتھ ناانصافی کے معاملے میں جب حکومت نے سخت کارروائی کی تھی تو یہ دیر آئے درست آئے والی بات لگی تھی، لیکن سماج کی بہن بیٹیوں کے ساتھ مسلسل ہونے والے ناخوشگوار واقعات سے واضح ہے کہ اعظم گڑھ کی کارروائی صرف ایک دکھاوا تھی، حکومت کی پالیسی کا حصہ نہیں۔

next