یوپی اسمبلی انتخابات: مقررہ وقت سے ایک گھنٹہ زیادہ پولنگ کرانے کا فیصلہ

سشیل چندرا نے کہا کہ کورونا کے خطرے کو مدنظر رکھتے ہوئے کمیشن نے فیصلہ کیا ہے کہ ووٹنگ کا دورانیہ ایک گھنٹہ بڑھایا جائے۔

چیف الیکشن کمشنر/ ٹوئٹر
چیف الیکشن کمشنر/ ٹوئٹر
user

یو این آئی

لکھنؤ: الیکشن کمیشن نے کورونا بحران کے دوبارہ ابھرنے کے سبب اتر پردیش کے آئندہ اسمبلی انتخابات میں مقررہ وقت سے ایک گھنٹہ زیادہ پولنگ کرانے سمیت متعدد اہم فیصلے لئے ہیں۔ ملک کے چیف الیکشن کمشنر سشیل چندرا نے ریاست میں انتخابی تیاریوں کا تین روزہ جائزہ لینے کے بعد جمعرات کو ایک پریس کانفرنس میں یہ جانکاری دی۔ انہوں نے کہا کہ کورونا کے خطرے کو مدنظر رکھتے ہوئے کمیشن نے فیصلہ کیا ہے کہ ووٹنگ کا دورانیہ ایک گھنٹہ بڑھایا جائے۔

سشیل چندرا کی قیادت میں کمیشن کے ایک 13 رکنی وفد نے اتر پردیش کے اپنے تین روزہ جائزہ دورے کے دوران سیاسی جماعتوں کے نمائندوں، مختلف تحقیقاتی ایجنسیوں اور انتخابی عمل سے متعلق دیگر فریقوں کے ساتھ کئی دور کی میٹنگوں کے بعد یہ اطلاع دی۔ کمیشن کے وفد میں ملک کے دونوں الیکشن کمشنر راجیو کمار اور ڈاکٹر انوپ چندر پانڈے اور الیکشن کمیشن کے سکریٹری جنرل امیش سنہا کے علاوہ دیگر سینئر افسران شامل تھے۔


سشیل چندرا نے بتایا کہ اتر پردیش اسمبلی کی مدت اگلے سال 14 مئی کو ختم ہو رہی ہے۔ ریاست میں کل 403 اسمبلی حلقے ہیں جن میں 317 جنرل، 84 درج فہرست ذات اور 02 درج فہرست قبائل کے ریزرو اسمبلی حلقے شامل ہیں۔ ان تمام نشستوں پر انتخابات اسمبلی کی میعاد ختم ہونے سے پہلے ہونے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اجلاس میں شریک تمام سیاسی جماعتوں کے نمائندوں نے کورونا پروٹوکول کی پاسداری کو یقینی بناتے ہوئے بروقت انتخابات کرانے کا مطالبہ کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کورونا انفیکشن کے خطرے کو مدنظر رکھتے ہوئے کمیشن یوپی میں آزادانہ، منصفانہ، لالچ سے پاک اور کورونا سے محفوظ انتخابات کرانے کے لیے پرعزم ہے۔ چندرا نے کہا کہ کمیشن کی یہ کوشش ہے کہ آنے والے انتخابات میں بزرگ شہریوں، معذور افراد، خواتین سمیت تمام نئے ووٹروں کی زیادہ سے زیادہ شرکت کو یقینی بنایا جائے۔ اس کے لیے خصوصی اقدامات بھی کیے گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کے تحت تمام پولنگ مراکز اور پولنگ عملہ کے لئے کووڈ پروٹوکول کی تعمیل کو یقینی بنایا جائے گا۔ اس کے علاوہ اس بار کورونا کے خطرے سے بچنے کے لیے پولنگ مراکز کی تعداد میں 11 ہزار سے زائد کا اضافہ کیا گیا ہے۔


چندرا نے کہا کہ کووڈ کے پیش نظر، سماجی دوری کے اصولوں کو ذہن میں رکھتے ہوئے پولنگ مراکز پر ضروری اقدامات کو یقینی بنایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اس کے تحت یوپی کے آئندہ انتخابات میں 1250 ووٹروں کے لیے ایک پولنگ مرکز قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اب تک ایک پولنگ مرکز میں زیادہ سے زیادہ 1500 ووٹرز تھے۔ اس طرح ریاست میں 1 لاکھ 74 ہزار 351 پولنگ مراکز بنائے جائیں گے۔ یہ تعداد گزشتہ انتخابات سے 11,020 زیادہ ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔