ترنمول کانگریس لیڈر واعظ خان کا گولی مار کر قتل، چار افراد گرفتار

ہوڑہ پولیس کمشنریٹ کی طرف سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ واعظ خان پیر کی رات نذیر گنج میں واقع اپنی ایک رہائش گاہ سے دوسرے گھر جا رہے تھے، اسی وقت 8-7 افراد نے انہیں گھیر لیا اور گولی مار دی۔

قتل، علامتی تصویر یو این آئی
قتل، علامتی تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

کولکاتا: مغربی بنگال کی حکمراں جماعت ترنمول کانگریس کے ایک مسلم لیڈر کو گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا ہے۔ اس کی شناخت واعظ خان کے طور پر ہوئی ہے۔ وہ ہوڑہ ضلع میں ترنمول اقلیتی سیل کے صدر تھے۔ اس معاملے میں پولیس نے اب تک چار لوگوں کو گرفتار کیا ہے۔

ہوڑہ پولیس کمشنریٹ کی طرف سے جاری ایک بیان میں بتایا گیا ہے کہ واعظ خان پیر کی رات نذیر گنج میں واقع اپنی ایک رہائش گاہ سے دوسرے گھر جا رہے تھے۔ اسی وقت، سات سے آٹھ افراد نے انہیں گھیر لیا اور گھر کے سامنے پوائنٹ بلین رینج سے گولی مار کر فرار ہو گئے۔ انہیں فوری طور پر اسپتال لے جایا گیا لیکن پولیس نے اسے مردہ قرار دے دیا۔ لاش کو پوسٹ مارٹم کے لیے بھیج دیا گیا ہے۔


رات میں ہی پولس نے دو افراد کو حراست میں لے لیا تھا۔ ان سے پوچھ گچھ کے بعد مزید دو افراد کے بارے میں معلومات ملی، جنہیں حراست میں لے کر پوچھ گچھ شروع کر دی گئی۔ چاروں کے بیانات میں تضاد ہونے پر انہیں گرفتار کیا گیا۔ ان کے خلاف تعزیرات ہند کی دفعہ 302 اور 120 بی کے تحت مقدمہ درج کر کے قانونی کارروائی شروع کر دی گئی ہے۔ باقی ملزمان کی تلاش بھی تیز کر دی گئی ہے۔ تحقیقات سے جڑے سنکرائیل تھانے کے ایک اہلکار نے بتایا کہ جائے وقوعہ کے آس پاس کوئی سی سی ٹی وی فوٹیج نہیں ہے لیکن کچھ ہی فاصلے پر ایک دکان میں سی سی ٹی وی کیمرہ نصب ہے جس کی فوٹیج کی جانچ کی جارہی ہے۔ اس کی بنیاد پر مفرور ملزمان کا پتہ لگانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

مقتول کے اہل خانہ نے الزام لگایا ہے کہ خان علاقے میں بھتہ خوری کی مخالفت کرتے تھے جس کی وجہ سے انہیں گولی ماری گئی ہے۔ ابتدائی طور پر پولیس کا خیال ہے کہ اسے پرانی دشمنی کی بناء پر قتل کیا گیا ہے۔ تاہم قتل کی سیاسی زاویہ سے بھی تحقیقات کی جا رہی ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔