ملک کے آئین کو اپنے ایجنڈے میں بدل کر حکومت 'یوم آئین' منا رہی ہے: محبوبہ مفتی

محبوبہ مفتی نے کہا کہ ملک میں ایسے نئے غیر آئینی قوانین بنائے جا رہے ہیں جن سے ہٹلر کی حکومت بھی شرمسار ہو رہی ہوگی۔ موصوفہ نے ان باتوں کا اظہار جمعرات کو 'یوم آئین' کے موقع پر اپنے ایک ٹوئٹ میں کیا۔

محبوبہ مفتی، تصویر یو این آئی
محبوبہ مفتی، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

سری نگر: پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے کہا ہے کہ حکومت ہند ملک کے آئین کو بی جے پی کے ایجنڈے میں تبدیل کر کے 'یوم آئین' منا رہی ہے جس پر میں حیران ہوں۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں ایسے نئے غیر آئینی قوانین بنائے جا رہے ہیں جن سے ہٹلر کی حکومت بھی شرمسار ہو رہی ہوگی۔ موصوفہ نے ان باتوں کا اظہار جمعرات کو 'یوم آئین' کے موقع پر اپنے ایک ٹوئٹ میں کیا۔

محبوبہ مفتی نے ٹوئٹ میں کہا کہ 'حکومت ہند کی طرف سے یوم آئین منانے پر متحیر ہوں کیونکہ انہوں نے اس (آئین) کو بی جے پی کے ایجنڈے میں تبدیل کر دیا ہے۔ سی اے اے، این آر سی اور لو جہاد جیسے نئے قوانین بنائے جا رہے ہیں جو نہ صرف آئین کی طرف سے منظور کردہ بنیادی حقوق کے منافی ہیں بلکہ ان سے ہٹلر کی حکومت بھی شرمسار ہو رہی ہوگی'۔

بتادیں کہ ملک میں 26 نومبر کو 'یوم آئین' منایا جاتا ہے۔ سال 1949 میں اسی روز قانون ساز اسمبلی نے باضابطہ طور آئین کو منظور کیا تھا جس کو بعد ازاں 26 جنوری 1950 سے نافذ کیا گیا تھا۔ بھارت میں 'یوم آئین' کو سال 2015 میں پہلی بار این ڈی اے کے دور حکومت میں منایا گیا اس کو 'قومی قانون دن' کے نام سے بھی یاد کیا جاتا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next