سماجی تنظیموں کا بچوں کے بڑھتے ہوئے جنسی استحصال پر اظہارِ تشویش

نوبل امن انعام یافتہ کیلاش ستیارتھی نے کہا کہ انڈیا چائلڈ پروٹیکشن فورم ایک بڑے عزم کی شروعات ہے، مشترکہ عزائم، خوابوں اور خیالات کو پورا کرنے کے مقصد سے فورم قائم کیا گیا ہے۔

کیلاش ستیارتھی، تصویر آئی اے این ایس
کیلاش ستیارتھی، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

نئی دہلی: پورے ملک کی سماجی تنظیموں نے کورونا کے دور میں بچوں کی اسمگلنگ میں اضافہ اور استحصال پر تشویش ظاہر کی ہے اور بچوں کے بچپن کو محفوظ بنانے کے لئے ایک منفرد پہل کرتے ہوئے انڈیا فور چائلڈ پروٹکشن فورم (آئی سی پی ایف) قائم کی ہے۔

نوبل امن انعام سے نوازارے گئے کیلاش ستیارتھی نے آئی سی پی ایف کا افتتاح کرتے ہوئے آج کہا کہ انڈیا چائلڈ پروٹیکشن فورم ایک بڑے عزم کی شروعات ہے۔ مشترکہ عزائم، خوابوں اور خیالات کو پورا کرنے کے مقصد سے فورم قائم کیا گیا ہے۔ یہ مختلف سول سوسائٹی تنظیموں کا ایک ایسا اتحاد ہے جو بچوں کے جنسی استحصال اور بچوں کی غلامی کے خاتمہ کے لئے کام کرے گا۔ فورم بچوں کے تئیں سماجی سوچ اور پالیسیوں کو تبدیل کرے گا اورسماجی بیداری میں توسیع لائے گا۔ فورم کے ذریعہ ہم ایسے ہندوستان کی تعمیر کرنے کی کوشش کریں گے جہاں کسی بھی بچے کا کسی بھی طرح کا استحصال نہیں ہوگا۔


انہوں نے بچوں کے تئیں ہمدردی کو بڑھانے اور اس مسئلہ کے طور پر اجاگر کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ دنیا میں جتنی بھی تواریخ بنی ہیں، تبدیلی کے صفحات لکھے گئے ہیں، انہیں عام لوگوں نے ہی لکھا ہے، خاصیت اس میں نہیں ہے کہ آپ کے پاس کتنے پیسے ہیں، کتنے بڑے عہدے پر ہیں، آپ کا کتنا نام ہے، خاصیت آپ کی اس بات میں ہے کہ آپ کے اندر اس کے لئے کتنی گہری ہمدردی ہے۔

اس کوشش کے بانی اور سابق آئی پی ایف افسر امود کنٹھ نے کہا کہ فورم ان بچوں کو تحفظ فراہم کرنے کا کام کرے گا جو گھریلو حفاظت سے محروم ہیں، ایسے بچوں کی ملک میں تعداد تین کروڑ سے زیادہ ہے۔ فورم بچوں کو ایک مضبوط حفاظتی شیلڈ فراہم کرنے کے لئے ایک بڑے ایکشن پلان کی شروعات ہے۔ اس کے دور رس اثرات ہوں گے۔ سرکاری اسکیموں، پالیسیوں، قوانین پر سول سوسائٹی کی تنظیموں کے کوشش سے ہم غیرمحفوظ بچوں تک پہنچنے کی کوشش کریں گے۔ ایسے بچوں کی شناخت کرنا اور ان کی حفاظت یقینی بنانا ہمارا مقصد ہے۔


کیلاش ستیارتھی چلڈرنس فاونڈیشن نے بچوں کی اسمگلنگ اور ان کے جنسی استحصال کی روک تھام کے لئے یہاں کانسٹی ٹیوشن کلب میں چار روزہ نیشنل کانفرنس کا انعقاد کیا جس میں بچوں کے امور پر موثر مداخلت کرنے والی کوششوں، شکتی واہنی، بچپن بچاو آندولن اور پرجولا جیسی پورے ملک کی 70سے زیادہ سول سوسائٹی تنظیموں نے حصہ لیا۔ اس میں مشترکہ طور پر فیصلہ کیا گیا کہ کورونا وبا کے بعد کے حالات جس تیزی سے بدلے ہیں اس میں تمام تنظیموں کو اپنے اختلافات کو فراموش کرکے بچوں کی زندگی سنوارنے کے مشترکہ خوابوں کی لڑائی لڑنی ہوگی جس کا نتیجہ انڈیا چائلڈ پروٹکشن فورم کے طورپر سامنے آیا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔