پدوچیری میں راہل گاندھی کا ماہی گیروں سے مکالمہ، کہا- ’زرعی قوانین ہر کسی کے لیے نقصان دہ‘

راہل گاندھی نے کہا کہ ’’آپ سمندر والے کسان ہیں، جو ملک کے باشندگان کے لئے کام کر رہے ہیں، ہم چاہتے ہیں کہ سمندر کی طاقت ماہی گیروں کے ہاتھ میں رہے نہ کہ صرف ایک یا دو افراد کے ہاتھ میں۔‘‘

راہل گاندھی کا پدوچیری کا دورہ / تصویر بشکریہ ٹوئٹر / @INCIndia
راہل گاندھی کا پدوچیری کا دورہ / تصویر بشکریہ ٹوئٹر / @INCIndia
user

قومی آوازبیورو

نئی دہلی: کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی بدھ کے روز پدوچیری کے دورے پر ہیں۔ اس سال ہونے جا رہے اسمبلی انتخابات سے قبل راہل گاندھی کا یہ پہلا دورہ ہے۔ راہل گاندھی نے یہاں ماہی گیروں سے براہ راست مکالمہ کیا اور ان کے مسائل جاننے کی کوشش کی۔

پدوچیری کے متھیا لپیٹ میں کانگریس لیڈر راہل گاندھی نے کہا ’’مرکزی حکومت نے کسانوں کے خلاف تین قوانین منظور کیے ہیں، جس کی وجہ سے کسانوں کا بہت نقصان ہونے جا رہا ہے۔ کسان ہمارے ملک کی ریڑھ کی ہڈی ہیں، لیکن حکومت نے ان سے پوچھے بغیر یہ تینوں قانون بنائے ہیں۔‘‘

راہل گاندھی نے کہا کہ مرکزی حکومت میں ماہی گیروں کے لئے ایک علیحدہ وزارت ہونی چاہیے تاکہ ان کی آواز بھی سنی جا سکے۔ ماہی گیروں کو انشورنس، پنشن کی سہولیات بھی دی جانی چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ یہاں پر تامل زبان سب سے اہم ہے اور اس کے بعد ہی کسی دیگر زبان کو سنا جانا چاہیے۔

راہل گاندھی نے کہا کہ یہ قوانین صرف کسانوں کو نہیں بلکہ آپ جیسے ماہی گیروں اور تمام عام لوگوں کو بھی نقصان پہنچا سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ’’آپ سمندر والے کسان ہیں، جو ملک کے باشندگان کے لئے کام کر رہے ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ سمندر کی طاقت ماہی گیروں کے ہاتھ میں رہے نہ کہ صرف ایک یا دو افراد کے ہاتھ میں۔‘‘

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔