لکھیم پور کھیری تشدد: آشیش مشرا کو جائے حادثہ پر لے کر پہنچی ایس آئی ٹی

ایس آئی ٹی نے تین ایس یو وی کا انتظام کیا تھا اور یہ بھی جانا کہ کس طرح تیز رفتار سے چل رہی ان گاڑیوں نے اس دن کسانوں کو کچلا تھا، ملزمین سے موقع پر ان کی موجودگی کے بارے میں بھی سوال کیا گیا۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

اتر پردیش کے لکھیم پور کھیری میں تشدد واقعہ کی جانچ چل رہی ہے۔ اس تعلق سے یو پی پولیس کی ایس آئی ٹی نے جمعرات کو مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ اجے مشرا کے بیٹے آشیش مشرا اور اس کے دوست انکت داس سمیت چار ملزمین کو جائے حادثہ پر لے کر پہنچی۔ ایس آئی ٹی نے ان کی موجودگی میں جائے حادثہ پر کرائم سین کو ری کریئٹ (جرائم سے جڑے واقعہ کو دہرانا) کیا۔ کرائم سین ری کریئٹ کیے جانے کے عمل میں آشیش مشرا اور انکت داس کے علاوہ بندوق بردار لطیف اور ڈرائیور شیکھر بھارتی بھی شامل رہے۔

ایس آئی ٹی نے تین ایس یو وی کا انتظام کیا تھا اور یہ بھی جانا کہ کس طرح تیز رفتار سے چل رہی ان گاڑیوں نے اس افسوسناک دن میں کسانوں کو کچل دیا تھا۔ ملزمین سے موقع پر ان کی موجودگی کے بارے میں سوال پوچھا گیا کہ وہ وہاں کیا کر رہے تھے، جب کہ انھیں پتہ تھا کہ کسان وہاں احتجاجی مظاہرہ کر رہے ہیں۔


ایس آئی ٹی نے معاملے میں چاروں لوگوں کے بیانات کی جانچ کی ہے۔ اس دوران ایس آئی ٹی کے ساتھ فورنسک سائنس لیباریٹری لکھنؤ کی ٹیم بھی موجود تھی۔ اس پریکٹس کے لیے موقع پر کثیر تعداد میں پولیس فورس کے ساتھ ہی پی اے سی اور آر اے ایف کے جوانوں کو بھی موقع پر تعینات کیا گیا تھا۔

اس عمل کے لیے پورے علاقے کی گھیرابندی کر دی گئی تھی، جہاں 3 اکتوبر کو حادثہ ہوا تھا۔ اس حادثہ میں چار کسانوں کو ایک ایس یو وی نے کچل دیا تھا جس کے بعد پیدا تشدد میں 5 دیگر لوگوں کی موت ہو گئی تھی۔ قابل ذکر ہے کہ جمعرات کو آشیش مشرا کی پولیس حراست کا آخری دن ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔