کشمیر: پلوامہ میں مسلح تصادم، لشکر کمانڈر ’ابو ہریرہ‘ سمیت تین ملی ٹینٹ ہلاک

جنوبی کشمیر کے قصبہ پلوامہ میں ایک شبانہ مسلح تصادم کے دوران سکیورٹی فورسز نے لشکر طیبہ کے کمانڈر اور دو مقامی ملی ٹینٹوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے

علامتی تصویر
علامتی تصویر
user

قومی آوازبیورو

سری نگر: جنوبی کشمیر کے قصبہ پلوامہ میں ایک شبانہ مسلح تصادم کے دوران سکیورٹی فورسز نے لشکر طیبہ کے کمانڈر اور دو مقامی ملی ٹینٹوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ جموں و کشمیر پولیس کے ایک ترجمان نے بتایا کہ قصبہ پلوامہ منگل اور بدھ کی درمیانی رات کو ہونے والے ایک مسلح تصادم کے دوران تین جنگجووں کو ہلاک کیا گیا ہے۔

آئی جی پی کشمیر نے خبررساں ایجنسی اے این آئی کو بتایا کہ انکاؤنٹر کے دوران پاکستانی لشکر طبیہ کے کمانڈر اعجاز عرف ابو ہریرہ مارا گیا۔ اس کے علاوہ دو مقامی ملی ٹینٹ بھی ہلاک ہوئے ہیں جن کی شناخت کی جا رہی ہے۔


سرکاری ذرائع نے بتایا کہ قصبہ پلوامہ میں جنگجووں کی موجودگی سے متعلق خفیہ اطلاع ملنے پر جموں و کشمیر پولیس، فوج کی 55 راشٹریہ رائفلز اور سی آر پی ایف نے منگل کی رات دیر گئے مذکورہ علاقے کو محاصرے میں لے کر تلاشی آپریشن شروع کیا۔ انہوں نے بتایا کہ ایک مشتبہ جگہ کی جانب پیش قدمی کے دوران وہاں موجود جنگجووں نے سکیورٹی فورسز پر فائرنگ کی جس کے بعد طرفین کے درمیان باضابطہ طور تصادم شروع ہوا۔

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ محاصرے میں پھنسنے والے جنگجووں کو خودسپردگی اختیار کرنے کی پیشکش کی گئی جو انہوں نے مسترد کی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ آخری اطلاعات ملنے تک مسلح تصادم میں تین جنگجو مارے جا چکے تھے جن کی لاشیں برآمد کی گئی ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔