بے تحاشہ مہنگائی کے سبب نوجوانوں کا پکوڑے فروخت کرنا بھی مشکل: ستیش مشرا

ستیش مشرا نے منگل کو یہاں ایک سمیلن میں کہا کہ ریاست و ملک کے خواندہ نوجوانوں کو پہلے بی جے پی حکومت نے پکوڑے فروخت کرنے کے لئے بولا اور پھر تیل گھی، گیس سب کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا۔

ستیش مشرا، تصویر آئی اے این ایس
ستیش مشرا، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

کوشامبی: بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) جنرل سکریٹری ستیش چندر مشرا نے بے روزگاری اور مہنگائی کے سلسلے میں بی جے پی حکومت پر طنز کستے ہوئے کہا ہے کہ تیل، گھی کی قیمتوں میں اتنا اضافہ ہوگیا ہے کہ نوجوان طبقہ حکومت کی مرضی کے مطابق پکوڑے بھی فروخت نہیں کرسکتا۔

ستیش مشرا نے منگل کو یہاں ایک سمیلن میں کہا کہ ریاست و ملک کے خواندہ نوجوانوں کو پہلے بی جے پی حکومت نے پکوڑے فروخت کرنے کے لئے بولا اور پھر تیل گھی، گیس سب کی قیمتوں میں اضافہ کر دیا۔ مطلب اگر ان کے بتانے پر بھی نوجوان پکوڑے فروخت کرنا چاہیں تو وہ ایسا نہیں کرسکتے کیونکہ مہنگائی کو بڑھا بڑھا کر برا حال کر دیا گیا ہے۔


برہمنوں کو بی ایس پی کی جانب لبھانے کے منشی کے تحت انہوں نے کہا ہے کہ کوشامبی کے برہمن لیڈر ہیں۔ اترپردیش کے برہمن اور دلت سماج مل کر بہن جی (مایاوتی) کی حکومت بنائیں گے۔ اور بی جے پی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کا کام کریں گے۔

ستیش مشرا نے کہا کہ سنسکرت اسکول اور سناتن دھرم کو ختم کرنے کا کام حکمراں جماعت بہت تیزی سے کر رہی ہے۔ ریاست کے سنسکرت اسکول بند ہونے کے دہانے پر ہیں یہاں تک کی پریاگ راج کے تقریباً 9 اسکول بند بھی ہوچکے ہیں۔ اور ریاست کے ہزاروں سنسکرت اسکول مٹھ بند ہوچکے ہیں اور کچھ بند ہونے کے قریب ہیں۔ سنسکرت اسکول کے عہدیداروں سے مل کر انہوں نے ان کے مسائل کو جانا ہے۔ بی ایس پی رکن پارلیمان نے کہا کہ سرکاری اسکولوں میں ٹیچروں کو ان کی تنخواہ نہیں مل رہی ہے اس کے علاوہ ان کی تقرری نہیں کی جا رہی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔