امید ہے کہ طالبان اسلامی اصولوں کے مطابق حکومت کریں گے: فاروق عبداللہ

فاروق عبداللہ نے کہا کہ افغانستان ایک الگ ملک ہے جو وہاں اقتدار میں آئے ہیں انہیں اب اس ملک کو سنبھالنا ہے میں امید کروں گا کہ ہر ایک کے ساتھ انصاف ہوگا اور وہ اسلامی اصولوں پر چل کر حکومت چلائیں گے۔

فاروق عبداللہ، تصویر یو این آئی
فاروق عبداللہ، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

سری نگر: نیشنل کانفرنس کے صدر و سابق وزیر اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے امید ظاہر کی ہے کہ طالبان افغانستان میں انسانی حقوق اور اسلامی اصولوں کے مطابق حکومت کریں گے۔ ان کا ساتھ ہی یہ بھی کہنا تھا کہ طالبان کو تمام ممالک کے ساتھ دوستانہ تعلقات قائم کرنے چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ نینشل کانفرنس جموں و کشمیر کے ریاستی درجے اور دفعہ 370 و دفعہ35 اے کی بحالی کے اپنے موقف پر برابرا قائم ہے۔

موصوف سابق وزیر اعلیٰ نے ان باتوں کا اظہار بدھ کے روز اپنے والد اور نیشنل کانفرنس کے بانی شیخ محمد عبداللہ کی 39 ویں برسی کے موقعے پر یہاں درگاہ حضرت بل میں واقع ان کے مزار پر فاتحہ پڑھنے کے بعد نامہ نگاروں کے ساتھ بات کرنے کے دوران کیا۔ انہوں نے کہا کہ 'شیر کشمیر (شیخ محمد عبداللہ) نے اپنی ساری زندگی اس قوم کی ترقی کے لئے گزار دی، مجھے امید ہے کہ یہ جماعت بھی اسی پر چلے گی اور آگے بھی لوگوں کی بہتری کے لئے کوشش کرے گی'۔


افغانستان کے بارے میں پوچھے جانے والے ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ میں امید کرتا ہوں کہ طالبان انسانی حقوق اور اسلامی اصولوں کے مطابق حکومت چلائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ 'افغانستان ایک الگ ملک ہے جو وہاں اقتدار میں آئے ہیں انہیں اب اس ملک کو سنبھالنا ہے میں امید کروں گا کہ ہر ایک کے ساتھ انصاف ہوگا اور وہ انسانی حقوق اور اسلامی اصولوں پر چل کر حکومت چلائیں گے'۔ ان کا کہنا تھا کہ طالبان کو تمام ممالک کے ساتھ دوستانہ تعلقات قائم کرنے چاہئے۔

ریاستی درجے کی بحالی کے بارے میں پوچھے جانے پر موصوف صدر کا کہنا تھا کہ 'جہاں تک جموں و کشمیر کے ریاستی درجے اور دفعہ 370 و دفعہ35 اے کی بحالی کا تعلق ہے ہم اس پر ڈٹے ہوئے ہیں ہم میں اس کے متعلق کوئی شگاف نہیں ہے'۔ انہوں نے کہا کہ نیشنل کانفرنس ہونے والے اسمبلی انتخابات سے دور نہیں رہے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم ان انتخابات میں ضرور حصہ لیں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔