بہار میں شراب بندی کے تئیں حکومت سخت، پٹنہ میں 55 افراد گرفتار

پولیس نے ایک بیان میں کہا کہ راجدھانی پٹنہ میں شراب قوانین کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں 55 لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے، پولیس نے اتوار کی شب 80 ہوٹلوں اور 12 جھگی بستیوں میں چھاپہ ماری کی تھی۔

شراب بندی، علامتی تصویر آئی اے این ایس
شراب بندی، علامتی تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

پولیس نے پیر کے روز ایک بیان میں کہا کہ راجدھانی پٹنہ میں شراب قوانین کی خلاف ورزی کرنے کے الزام میں 55 لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔ ڈویژنل کمشنر کی ہدایت کے بعد پٹنہ پولیس نے اتوار کی شب 80 ہوٹلوں اور 12 جھگی بستیوں میں چھاپہ ماری کی تھی۔ گرفتار لوگوں میں ایک ریلوے گارڈ، ہوٹل منیجر اور ایک ٹھیکیدار شامل ہے۔

اس درمیان شادیوں کے لیے ہوٹلوں میں آنے والے مہمانوں نے دعویٰ کیا کہ پٹنہ پولیس نے چھاپہ ماری کر کے ان کی پرائیویسی کی خلاف ورزی کی ہے۔ سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی جس میں پٹنہ پولیس کی ایک ٹیم بغیر کسی لیڈی پولیس کے ایک میریج ہال میں چھاپہ ماری کر رہی تھی۔ مرد پولیس اہلکاروں نے خاتون مہمانوں کے کمروں میں داخلہ کیا اور سوٹ کیس، الماری اور بیت الخلاء سمیت ان کے سامان کی تلاشی لی۔


شادی تقریب میں شامل ایک مہمان سنیل کمار نے کہا کہ تلاشی کے دوران پٹنہ پولیس کے ایک افسر نے ہمیں بتایا کہ ان کی ٹیم اعلیٰ افسروں کے حکم کی تعمیل کر رہی ہے اور وہ زبردست دباؤ میں ہیں۔ سینئر پولیس سپرنٹنڈنٹ اوپندر شرما نے کہا کہ پٹنہ کے ڈویژنل کمشنر سنجے اگروال کی ہدایت کے بعد ہم نے 300 سے زائد لوگوں کو گرفتار کیا ہے۔ آنے والے دنوں میں بھی ایسی چھاپہ ماری جاری رہے گی۔ ڈویزنل کمشنر نے افسران کو ریاست میں شراب بندی کو سختی سے نافذ کرنے کی ہدایت دی ہے۔ ہدایت کے مطابق میریج ہال، بینکوئٹ ہال، دھرم شالاؤں اور ہوٹلوں کے منتظمین کو مہمانوں کی سرگرمیوں پر نظر رکھنے کے لیے ہر جگہ سی سی ٹی وی کیمرے لگانے ہوں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔