ممبئی میں قربانی کے بکروں کی ضبطی نا قابل برداشت : عارف نسیم خان

عارف نسیم خان نے ایڈ یشنل چیف سکریٹری سیتا رام کنٹے و ممبئی میونسپل کمشنر اقبال سنگھ چہل سے اس طرح کی کارروائیوں پر فوری طور پر روک لگانے کی مانگ کی ہے۔

ممبئی کی بکرا منڈی کی فائل تصویر / Getty Images
ممبئی کی بکرا منڈی کی فائل تصویر / Getty Images
user

یو این آئی

ممبئی: ریاست مہاراشٹرا میں عید الاضحی کے موقع پر بکروں کی آن لائن خریداری کی اجازت کے باوجود ممبئی میونسپل کارپوریشن کے محکمہ مارکیٹنگ کی جانب سے جانوروں کی ضبطی اور ان کے خلاف کارروائی پر مہاراشٹر کے سابق وزیر و ریاستی کانگریس کے نائب صدر محمد عارف نسیم خان نے ناراضگی کا اظہار کیا ہے۔ انہون نے ایڈ یشنل چیف سکریٹری سیتا رام کنٹے و ممبئی میونسپل کمشنر اقبال سنگھ چہل سے اس طرح کی کارروائیوں پر فوری طور پر روک لگانے کی مانگ کی ہے۔

نسیم خان نے ان دونوں اعلی افسران سے ٹیلیفون پرگفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے ایک جانب تو آن لائن بکروں کی خریداری کے لئے گائڈ لائن جاری کی ہے لیکن دوسری جانب قربانی کے جانوروں کو ضبط کیا جارہا ہے۔ مسلمانوں کے اہم فریضہ قربانی کی ادایئگی میں سرکاری افسران کی اس طرح کی غیر ضروری مداخلت ناقابل برداشت ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ روز مضافات کے وکھرولی پارک سائٹ کرلا نہرو نگر، جوگیشوری ایس وی روڈ، اور دیگر مضافاتی علاقوں میں میونسپل کارپوریشن کے مارکیٹ سپرٹنڈنٹ نے جانوروں کی ضبطی کی کارروائی کا آغاز کیا تھا۔

نسیم خان نے ان کارروائی پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے مزید کہا کہ اسی طرح سے عروس البلاد ممبئی کے سرحدی علاقے ملنڈ اور دہیسر چیک ناکوں پر ایک بڑی تعداد میں جانوروں کے ٹرک کھڑے ہوئے ہیں اور انہیں ممبئی میں داخلہ کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے نیز مختلف دشواریوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ سابق وزیر نے مزید کہا کہ ایک ریاست سے دوسری ریاست آمدورفت کے ذرائع پر پابندی ہے لیکن اندرون ریاست بکرا کی نقل و حمل کی اجازت ہے اس کے باوجود بھی جانوروں کی گاڑیوں کو روکا جارہا ہے۔

واضح رہے کہ نسیم خان نے اس سے قبل ریاستی وزیر اعلی ادھو ٹھاکرے، وزیر داخلہ انیل دیشمکھ، کابینی وزراء بالا صاحب تھورات، اشوک چوان سمیت دیگر کو مکتوبات ارسال کر کے ریاستی حکومت کی جانب سے قربانی کے ضمن میں جاری کردہ مبہم گائڈ لائن پر اعتراض جتایا تھا اور اس میں ترمیم کی مانگ کرتے ہوئے قربانی کے دوران رعایت دینے کا مطالبہ کیا تھا۔

Published: 25 Jul 2020, 8:25 PM
next