لوگوں سے 100 کروڑ ٹھگنے والا ’کینڈی بابا‘ گرفتار

گرفتاری کے بعد کینڈی بابا کو پولس حراست میں بھیج دیا گیا ہے۔ منگل کے روز کرائم برانچ نے اسے مقامی عدالت میں پیش کیا تھا جس کے بعد ٹھگی کرنے والے بابا کو 10 دنوں کی پولس حراست میں بھیجا گیا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

کینڈی بابا کے نام سے مشہور راجیش نامی دھوکہ باز کو ہریانہ پولس کے کرائم برانچ نے گرفتار کر لیا ہے۔ یہ کامیابی پولس کو پیر کی دیر شب اس وقت ملی جب وہ فرید آباد سیکٹر 30 میں چھپا بیٹھا تھا۔ بتایا جاتا ہے کہ لوگوں کو سستا سونا فروخت کرنے، بیرون ممالک بھیجنے اور ان کی دولت دوگنی کرنے کا لالچ دے کر کینڈی بابا نے تقریباً 100 کروڑ کی ٹھگی کی تھی اور 2018 سے ہی فرار تھا۔

گرفتاری کے بعد کینڈی بابا کو پولس حراست میں بھیج دیا گیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ منگل کے روز کرائم برانچ نے اسے مقامی عدالت میں پیش کیا تھا جس کے بعد ٹھگی کرنے والے بابا کو 10 دنوں کی پولس حراست میں بھیج دیا گیا۔ گرفتاری کے بعد پولس نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ کینڈی بابا بنیادی طور پر کروکشیتر کے شریف گڑھ کا رہنے والا ہے۔ شروع میں اس نے بابا بننے کا ڈھونگ کیا اور اپنے بھکتوں کو کینڈی تقسیم کرتے کرتے 'کینڈی بابا' کے نام سے مشہور ہو گیا۔ پھر اس نے اپنا نام باضابطہ کینڈی بابا رکھ لیا، حالانکہ اصل نام راجیش ہے۔

پولس نے مزید بتایا کہ کینڈی بابا نے فرید آباد کے علاوہ کئی دیگر اضلاع میں بھی لوگوں سے ٹھگی کی ہے۔ یہ لوگوں کو سستا سونا فروخت کرنے اور بیرون ممالک بھیجنے کا جھانسہ دے کر پیسہ اینٹھنے کا کام کرتا تھا۔ 2018 میں جب لوگوں کو اس پر شبہ ہونے لگا تو وہ فرار ہو گیا۔ سی آئی اے انچارج سریندر سنگھ کا کہنا ہے کہ "ملزم نے لوگوں سے تقریباً 100 کروڑ روپے کی ٹھگی کی ہے۔ 2018 سے ہی وہ فرار تھا۔ فرید آباد کے علاوہ ریاست کے کئی اضلاع میں اس کے خلاف تقریباً 30 معاملے درج ہیں۔"

میڈیا ذرائع سے موصول ہو رہی خبروں کے مطابق کینڈی بابا عرف راجیش لاک ڈاؤن کی وجہ سے فرید آباد میں چھپا بیٹھا تھا اور اس نے اپنی شکل و شباہت بھی بدل رکھی تھی تاکہ پولس کی نظروں سے بچا رہے۔ پولس کو اس کے پاس سے ایک پستول بھی برآمد ہوا ہے۔

next