'ریپبلک ٹی وی' اور 'ٹائمز ناؤ' کے خلاف ہائی کورٹ پہنچا بالی ووڈ!

سوشانت سنگھ راجپوت معاملے کی کوریج کے دوران بالی ووڈ کے خلاف مہم چلانے کو لے کر فلم انڈسٹری کے تین درجن فلمساز اور پروڈکشن ہاؤس نے ریپبلک ٹی وی اور ٹائمز ناؤ کے خلاف دہلی ہائی کورٹ میں اپیل کی ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

تنویر

بالی ووڈ کی 4 ایسو سی ایشنز اور 34 فلمسازوں نے دہلی ہائی کورٹ میں 'ریپبلک ٹی وی' سے منسلک ارنب گوسوامی، پردیپ بھنڈاری اور 'ٹائمز ناؤ' سے منسلک راہل شیو شنکر، نویکا کمار اور کئی دیگر نامعلوم کے خلاف دہلی ہائی کورٹ میں معاملہ دائر کیا ہے۔ اس کیس میں فلمسازوں اور بالی ووڈ ایسو سی ایشنز نے کہا ہے کہ یہ چینلز فلم انڈسٹری کے بارے میں بے عزتی والے اور غلط باتیں کہتے ہیں اور بدنام کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔ اپیل میں فلمسازوں نے ان چینلوں کو اس طرح کی بیان بازی، پروگرام یا خبر کی اشاعت پر روک لگانے کا مطالبہ کیا ہے۔ اپیل میں کہا گیا ہے کہ ان چینلوں کو کسی بھی معاملے کے میڈیا ٹرائل سے روکا جائے کیونکہ یہ بالی ووڈ سے جڑے لوگوں کی پرائیویسی کی خلاف ورزی ہے۔

عدالت میں داخل عرضی میں کہا گیا ہے کہ ان چینلوں کو کیبل ٹیلی ویژن نیٹورک ایکٹ 1994 کے تحت پروگرامنگ کوڈ پر عمل کرنے کو کہا جائے۔ ساتھ ہی ان کے ذریعہ اب تک شائع یا نشر وہ سبھی مواد واپس لینے کو کہا جائے جو ان چینلوں نے بالی ووڈ کے خلاف دکھائی یا شائع کی ہے۔


عرضی دہندگان نے کہا ہے کہ ان چینلوں نے بالی ووڈ کے لیے بے عزتی والے طرح طرح کے الفاظ کا استعمال کیا ہے اور بالی ووڈ کو دنیا کی سب سے گندی فلم انڈسٹری کہا ہے۔ اپیل میں کہا گیا ہے کہ بالی ووڈ ایک باوقار صنعت ہے جسے منظوری ملی ہوئی ہے۔ کئی دہائیوں سے بالی ووڈ حکومت کے لیے خزانہ کا ایک بڑا ذریعہ بھی ہے اور غیر ملکی کرنسی بھی کماتا ہے۔ اتنا ہی نہیں، بالی ووڈ لاتعداد لوگوں کو روزگار مہیا کراتا ہے۔

داخل عرضی کے مطابق بالی ووڈ کے خلاف چلائی گئی اس مہم سے ان لوگوں کی روزی روٹی پر بحران کھڑا ہوا ہے جو اس سے جڑے ہوئے ہیں۔ اپیل میں کہا گیا ہے کہ پہلے ہی کووڈ وبا کے سبب فلم صنعت پر بحران کا عالم ہے، ایسے میں اس طرح کی مہم سے اسے مزید نقصان ہوا ہے۔ اپیل کے مطابق نیوز چینلوں نے بالی ووڈ کو کریمنل اور ڈرگ ایڈکٹ قرار دے دیا ہے۔


جن فلمسازوں اور ایسو سی ایشنز نے یہ عرضی داخل کی ہے ان میں پروڈیوسرس گلڈ آف انڈیا، سِنے اینڈ ٹی وی آرٹسٹ ایسو سی ایشن، فلم اینڈ ٹی وی پروڈیوسرس کاؤنسل، اسکرین رائٹرس ایسو سی ایشن، عامر خان پروڈکشنز، اجے دیوگن فلم، ایڈ-لیب فلمز، آندولن فلمز، انل کپور فلم اینڈ کمیونکیشن نیٹورک، ارباز خان پروڈکشن، آشوتوش گواریکر پروڈکشنز وغیرہ کے نام اہمیت کے حامل ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔