ترویندرم ہوائی اڈہ اڈانی گروپ کو دینے پر وزیر اعلیٰ وجین ناراض

ریاست کی بایاں بازو حکومت دراصل ترویندرم ہوائی اڈے کو کوچین اور کنور بین الاقوامی ہوائی اڈے کی مدد کے لئے بنانا چاہتی تھی لیکن مرکزی حکومت کے اس فیصلے کے بعد ریاستی حکومت کا یہ منصوبہ ناکام ہوگیا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

ترواننت پورم: کیرالہ کے ترویندرم بین الاقوامی ہوائی اڈے کواڈانی گروپ کو لیز پر دینے کے مرکزی حکومت کے فیصلے کا بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی کیرالہ یونٹ نے خیرمقدم کیا ہے جبکہ ریاست کے وزیر اعلی پنارائی وجین نے اس فیصلے پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے مرکزی حکومت سے جمعرات کو اس فیصلے پر ازسرنو غور کرنے کی اپیل کی ہے۔

ریاست کی بایاں بازو حکومت دراصل ترویندرم ہوائی اڈے کو کوچین اور کنور بین الاقوامی ہوائی اڈے کی مدد کے لئے بنانا چاہتی تھی لیکن مرکزی حکومت کے اس فیصلے کے بعد ریاستی حکومت کا یہ منصوبہ ناکام ہوگیا۔


بی جے پی کے ریاستی سکریٹری ایڈوکیٹ ایس سریش نے اس فیصلے کے سلسلے میں نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت کا یہ فیصلہ تراوننت پورم کے رکن پارلیمنٹ ششی تھرور کے لئے بڑا جھٹکا ہے جنہوں نے اپنی بات واضح طور سے نہیں رکھی۔ انہوں نے کہا کہ نہ جانے کیوں ریاستی حکومت ترویندرم ہوائی اڈے کو شمالی ضلع کے دوہوائی اڈوں کو جوڑنے کے لئے ڈیولپ کرنا چاہتی تھی۔

سریش نے دعوی کیا کہ وزیراعظم نریندر مودی کی قیادت والی این ڈی اے حکومت کو ترویندرم ہوائی اڈوں کو سرکاری نجی کمپنی شراکت داری (پی پی پی) ماڈل کے تحت ڈیولپ کرنے کے فیصلے کو ترویندرم کے لوگوں کی پوری حمایت حاصل ہے۔ وجین نے وزیراعظم کو خط تحریر کرکے ترویندرم ہوائی اڈے کو نجی شعبہ کو سونپنے پر ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت کو اپنے اس فیصلے پر ازسرنو غور کرنا چاہیے۔


انہوں نے بتایا کہ ’’اس فیصلے سے مرکزی حکومت نے ریاستی حکومت کی اسپیشل پرپز وہیکل (ایس پی وی) کی اپیل کونظرانداز کردیا ہے جس میں ریاستی حکومت اہم اسٹیک ہولڈر ہوتا ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ یہ فیصلہ سال 2003 میں ریاستی حکومت کو مرکزی وزارت شہری پرواز کی طرف سے دیئے گئے یقین دہانی کی خلاف ورزی ہے۔

انہوں نے دعوی کیا کہ یقین دہانی کرائی گئی تھی کہ جب بھی ترویندرم ہوائی اڈے کو نجی شعبہ کو حوالے کرنے کی بات ہوگی تب مرکزی حکومت ریاستی حکومت سے تبادلہ خیال کرکے ہوائی اڈے کی ترقی کے لئے فیصلہ کرے گی۔ وزیراعلی نے یاد دلایا کہ ریاستی حکومت نے بین الاقوامی ٹرمنل کی تعمیر کے لئے مفت میں 23.57 ایکڑ زمین ائرپورٹ اتھارٹی آف انڈیا (اے اے آئی) کو منتقل کی تھی جس میں شرط یہ تھی کہ زمین کی ویلیو کیرالہ کی شیئر سرمایہ ایس پی وی کے طور پر ہوگی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔