مودی حکومت کے ذریعہ راکیش استھانا کی من مانی تقرری: کانگریس

پون کھیڑا نے کہا کہ راکیش استھانا وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر داخلہ امت شاہ کے پسندیدہ افسر ہیں، لہذا سپریم کورٹ کے حکم سے قطع نظر گجرات کیڈر کے افسر کو دہلی پولیس کا کمشنر بنایا گیا ہے۔

کانگریس ترجمان پون کھیڑا، تصویر یو این آئی
کانگریس ترجمان پون کھیڑا، تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

نئی دہلی: کانگریس نے گجرات کیڈر سے انڈین پولیس سروس (آئی پی ایس) افسر راکیش استھانا کی دہلی پولیس کمشنر کے عہدے پر تقرری پر سوال کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت افسران کی تقرری میں منمانی کر رہی ہے اور تقرری کے سسٹم کو توڑ رہی ہے۔

کانگریس کے ترجمان پون کھیڑا نے بدھ کو یہاں پریس کانفرنس میں بتایا کہ راکیش استھانا وزیر اعظم نریندر مودی اور وزیر داخلہ امت شاہ کے پسندیدہ افسر ہیں، لہذا سپریم کورٹ کے حکم سے قطع نظر گجرات کیڈر کے افسر کو دہلی پولیس کا کمشنر بنایا گیا ہے۔


پون کھیڑا نے راکیش استھانا کی تقرری کو عدالت کے حکم کی خلاف ورزی قرار دیتے ہوئے کہا کہ عدالت کے رہنما خطوط کے مطابق اگر کسی افسر کے ریٹائرمنٹ کے چھ ماہ سے کم وقت رہ جاتا ہے تو اسے اس سطح کے کسی عہدے پر مقرر نہیں کیا جاسکتا ہے، لیکن راکیش آستھانا کے چار ماہ باقی رہ گئے تھے پھر بھی انہیں مقرر کیا گیا۔

ترجمان نے بتایا کہ نریندر مودی اور امت شاہ کی جوڑی ہر جگہ گجرات کیڈر کے افسران کو بھر رہی ہے اور قواعد کو نظر انداز کر رہی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ گجرات کیڈر کے افسر کو دہلی پولیس کا کمشنر بنا کر یونین ٹیریٹری کیڈر کے افسران کو نظر انداز کیا گیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔