دہلی میں ایک نابالغ لڑکی کو اغوا کرکے 60 ہزار میں کیا گیا فروخت، دو گرفتار

آلوک کمار نے بتایا کہ تفتیش کے دوران پتہ چلا کہ نیرج دہلی کے روہنی سیکٹر 2 کی باشندہ مسکان اور آگرہ کی رہائشی شیتل کے ساتھ مل کر نابالغ لڑکی کو راجستھان کے گوپال لال کو 60 ہزار روپے میں فروخت کیا۔

گرفتار، علامتی تصویر آئی اے این ایس
گرفتار، علامتی تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

نئی دہلی: قومی دارالحکومت دہلی میں ایک 15 سالہ نابالغ لڑکی کو اغوا کرنے اور اسے راجستھان میں 60 ہزار روپے میں فروخت کرنے کا سنسنی خیز معاملہ سامنے آیا ہے۔ دہلی پولیس نے شالیمار باغ تھانے کے اس معاملے میں دو ملزموں کو گرفتار کیا ہے اور لڑکی کو راجستھان کے سیکر میں ملزم کے چنگل سے آزاد کرایا۔

دہلی پولیس کی کرائم برانچ کے جوائنٹ کمشنر آلوک کمار نے اتوار کو بتایا کہ کلیدی ملزم نیرج سونکر دہلی کے حیدر پور کا باشندہ ہے اور راجستھان کا رہنے والا گوپال لال کو گرفتار کیا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ تفتیش کے دوران پتہ چلا کہ نیرج دہلی کے روہنی سیکٹر 2 کی باشندہ مسکان اور آگرہ-اترپردیش کی رہائشی شیتل کے ساتھ مل کر نابالغ لڑکی کو راجستھان کے گوپال لال کو 60 ہزار روپے میں فروخت کیا۔ گوپال اس لڑکی کی شادی اپنے بہنوئی دنویر عرف دانا سے کرنا چاہتا تھا۔ پولیس نے دو ملزموں کو گرفتار کیا اور گوپال لال سے ایک 15 سالہ لڑکی کو برآمد کیا۔


لڑکی کو راجستھان کے سیکر سے برآمد کیا گیا جہاں اسے شادی کے لیے لے جایا گیا تھا۔ پولیس کی ٹیم نے اتر پردیش کے آگرہ اور راجستھان کے سیکر میں چھاپے مارے تاکہ ملزمان کو گرفتار کیا جا سکے اور متاثرہ کو آزاد کیا جا سکے۔ اس نے بتایا کہ اس کیس کا ایک ملزم دنویر مفرور ہے۔ وہ اس لڑکی سے شادی کرنا چاہتا تھا۔ اس معاملے میں ملزم لڑکیوں روہنی کی مسکان اور آگرہ کی شیتل کے خلاف مناسب قانونی کارروائی کی جائے گی۔

آلوک کمار نے بتایا کہ لڑکی کو بیچ کر حاصل کی گئی رقم میں سے 30 ہزار روپے نیرج کے حصے میں آئے تھے، جسے پولیس نے اس کی گرفتاری کے ساتھ اس سے برآمد کر لئے۔ اس نے بتایا کہ دہلی کے شالیمار باغ کے علاقے حیدر پور کی رہائشی لاپتہ لڑکی کو 16 ستمبر 2021 کو شالیمار باغ پولیس اسٹیشن میں اس کے اہل خانہ نے لاپتہ ہونے کی اطلاع دی تھی۔ ایف آئی آر اگلے دن 17 ستمبر کو درج کی گئی۔ تحقیقات کے دوران پولیس کو پتہ چلا کہ نابالغ لڑکی کو اغوا کر کے اتر پردیش کے آگرہ اور وہاں سے راجستھان لے جایا گیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔