مظاہرہ کرنے والے 60 کسان دم توڑ چکے، پھر بھی پی ایم مودی خاموش بیٹھے ہیں: کانگریس

سرجے والا نے کہا کہ پی ایم مودی کسانوں کے ساتھ بے رحمی والا برتاؤ کر رہے ہیں۔ وہ ان کی تکلیف کو نہیں سمجھ پا رہے ہیں، اسی لئے ان کے بارے میں کچھ بھی سوچنے سمجھنے کو تیار نہیں ہیں۔

کانگریس لیڈر آر ایس سرجے والا / تصویر یو این آئی
کانگریس لیڈر آر ایس سرجے والا / تصویر یو این آئی
user

یو این آئی

نئی دہلی: کانگریس نے وزیراعظم نریندر مودی پر الزام لگایا ہے کہ وہ دہلی کی سرحد پر تحریک کر رہے کسانوں کی پریشانی کو نہیں سمجھتے اور ان کے درد پر خاموشی اختیار کیے ہوئے ہیں، اس لئے مایوس ہوکر تحریک کرنے والے کسان ٹریکٹر ریلی نکالنے کے لئے مجبور ہو رہے ہیں۔

کانگریس ترجمان رندیپ سنگھ سرجے والا نے جمعرات کو یہاں نامہ نگاروں کے سوالوں پر کہا کہ پی ایم مودی کسانوں کے ساتھ بے رحمی والا برتاؤ کر رہے ہیں۔ وہ ان کی تکلیف کو نہیں سمجھ پا رہے ہیں، اسی لئے ان کے بارے میں کچھ بھی سوچنے سمجھنے کو تیار نہیں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دہلی کی سرحد پر شدید سردی میں تحریک کر رہے کسان بہت پریشان ہیں۔ وہ سخت ٹھنڈ میں کھلے آسمان کے نیچے بیٹھے ہیں۔ احتجاج کرنے والے اب تک 60 کسان دم توڑ چکے ہیں، لیکن حکومت ان کے بارے میں کچھ بھی بولنے کو تیار نہیں ہے۔

کانگریس ترجمان نے کہا کہ پی ایم مودی کو کسان ہی نہیں، عام لوگوں کے ساتھ ہو رہے ظلم کی بھی فکر نہیں ہے۔ اتر پردیش میں ہاتھرس کا واقعہ ہوا اور اب اسی طرح کا دردناک واقعہ بدایوں میں ہوا ہے لیکن وزیر اعظم ان سبھی معاملوں پر خاموشی اختیار کیے ہوئے ہیں۔ یہ سب کے لئے باعث تشویش ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next