آئی پی ایل 2020: شکھر کے آخر تک ٹکے رہنے پر جیت کے امکان تھے، ایئر

شریئس ایئر نے کہا کہ آخری اوور تک میچ جانے سے ہی میں بے چین تھا۔ مجھے معلوم تھا کہ اگر شکھر آخر تک رہتے ہیں تو ہم میچ جیت سکتے ہیں، لیکن اکشر پٹیل نے جس طریقے سے پرفارم کیا وہ خاصہ شاندار تھا۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

شارجہ: چنئی سپر کنگز کے خلاف میچ وننگ سنچری اننگز کھیلنے والے اوپنر شکھر دھون کی تعریف کرتے ہوئے دہلی کیپٹلز کے کپتان شریئس ایئر نے کہا ہے کہ انہیں اس بات کا علم تھا کہ شکھر کے آخر تک کریز پر موجود رہنے سے ٹیم کو جیت مل سکتی ہے۔

دہلی نے جیت کے لئے 180 رنز کے ہدف کے تعاقب میں شکھر کے ناقابل شکست 101 رنز کی 58 گیندوں میں 14 چوکوں اور ایک چھکے پر مزین اننگز کی بدولت میچ پانچ وکٹوں سے جیت لیا۔ دہلی کے لئے اکشر پٹیل نے بھی پانچ گیندوں پر 21 رنز کی ناقابل شکست اننگ کھیلی اور ٹیم کی فتح میں اہم کردار ادا کیا۔

شریئس ایئر نے کہا کہ آخری اوور تک میچ جانے سے ہی میں بے چین تھا۔ مجھے معلوم تھا کہ اگر شکھر آخر تک رہتے ہیں تو ہم میچ جیت سکتے ہیں ۔ لیکن اکشر پٹیل نے جس طریقے سے پرفارم کیا وہ خاصہ شاندار تھا۔ جب بھی ہم ڈریسنگ روم میں مین آف دی میچ کا ایوارڈ دیتے ہیں تو وہ وہیں رہتا ہے۔

شریئس ایئر نے کہا کہ اکشر کی تیاری ہمیشہ سے درست رہی ہے اور وہ جانتا ہے کہ وہ کیا کر رہا ہے۔ ہم کیمپ کے پہلے دن سے ہی ایک ٹیم کی حیثیت سے اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کر رہے ہیں۔ ہم ایک دوسرے کی طاقت اور کمزوریوں سے بخوبی واقف ہیں۔ ٹیم میں ہر کوئی ایک دوسرے کی کامیابی اور ناکامی کو اسی طرح دیکھتا ہے۔ میں نے میچ کے دوران ایک ٹیم کے کھلاڑی سے کہا کہ اکشر کو اس طرح کی بیٹنگ کرتے ہوئے خوشی محسوس ہوتی ہے۔ بحیثیت کپتان میں نے راحت کی سانس بھی لی ہے۔

next