لکھیم پور کھیری تشدد کے خلاف کناڈا میں احتجاجی ریلی

لکھیم پور کھیری تشدد میں کسانوں کی موت کی گونج صرف دہلی تک ہی محدود نہیں ہے، بلکہ بیرون ممالک میں بھی ناراضگی کا اظہار ہو رہا ہے، کناڈا میں اس واقعہ کے خلاف احتجاجی ریلی کا انعقاد عمل میں آیا۔

کناڈا میں احتجاجی ریلی، تصویر آئی اے این ایس
کناڈا میں احتجاجی ریلی، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

کناڈا کے برٹش کولمبیا میں لکھیم پور کھیری تشدد کے خلاف احتجاجی ریلی کا انعقاد عمل میں آیا۔ ایک آن لائن میگزین ’ریڈیکل دیسی‘ کے ذریعہ منعقد ریلی جمعہ کے روز سرّے میں ہندوستانی ویزا اور پاسپورٹ درخواست مرکز کے باہر منعقد کی گئی تھی۔ ریلی میں شامل لوگوں نے متاثرہ کنبہ کے لیے انصاف اور اس میں شامل لوگوں کی گرفتاری کے علاوہ مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ اجے مشرا کی معطلی کا مطالبہ کیا۔

کسان زرعی قوانین کے خلاف پرامن مظاہرہ کر رہے ہیں۔ ان کا ماننا ہے کہ نئے قوانین سے ان کی روزی روٹی کو خطرہ ہے اور وہ گزشتہ نومبر سے دہلی کے بارڈرس کے پاس ڈیرا ڈالے ہوئے ہیں۔ سرّے ریلی میں حصہ لینے والوں نے مرکزی وزیر اور ان کے بیٹے آشیش کے خلاف کارروائی اور زرعی قوانین کو منسوخ کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔


ریلی کے شروع میں کچھ دیر مہلوکین کی یاد میں خاموشی اختیار کی گئی۔ اس دوران ہلاک کسانوں کے نام بھی پڑھے گئے۔ چار کسانوں کے قتل کے بعد ہوئے تشدد کے دوران مارے گئے ایک صحافی رمن کشیپ کو بھی یاد کیا گیا۔ ریلی میں موجود لوگوں نے متاثرین کو انصاف دلانے کی گزارش کی۔ مقررین میں مشہور کمیونٹی کارکن راکیش کمار، امتیاز پوپٹ، کلوندر سنگھ، کیسر سنگھ باغی، میڈیا ہستیاں گروندر سنگھ دھالیوال، نوجوت ڈھلوں اور ریڈیکل دیسی کے ڈائریکٹر گرپریت سنگھ شامل تھے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔