امریکہ: کورونا نے گزشتہ ڈیڑھ مہینے میں 3 لاکھ لوگوں کو کیا بے روزگار

فیڈرل ریزرو کے نائب صدر رچرڈ كلوریڈا نے کا کہنا ہے کہ ”ہم سب سے زیادہ سنگین اور بے روزگاری کے دور سے گزر رہے ہیں۔ بد قسمتی سے بے روزگاری کی شرح 1940 کی سطح پر پہنچ گئی ہے۔“

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

یو این آئی

واشنگٹن: امریکہ کے فیڈرل ریزرو کے نائب صدر رچرڈ كلوریڈا نے کہا کہ كورونا وائرس (كووڈ -19) کے پھیلنے کی وجہ سے ملک میں گزشتہ چھ ہفتوں میں بے روزگاری کی شرح میں اضافہ ہوا ہے اور یہ 1940 کی سطح پر پہنچ گئی ہے۔

رچرڈ كلوریڈا نے منگل کو کہا ’’ہم سب سے زیادہ سنگین اور بے روزگاری کے دور سے گزر رہے ہیں‘‘۔ انہوں نے کہا کہ بد قسمتی سے بے روزگاری کی شرح 1940 کی سطح پر پہنچ گئی ہے۔ لیبر سیکشن نے کہا کہ ملک میں پہلی بار گزشتہ چھ ہفتوں کے دوران 3 لاکھ افراد بے روزگار ہوئے ہیں۔


رچرڈ كلوریڈا نے کہا کہ ملک میں جلد ہی بے روزگاری کی شرح میں مزید اضافہ ہونے والا ہے۔ یہ وائرس کی وجہ سے معیشت کے منظرنامے پر انحصار کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ ایک بار پھر مارکیٹ کھلنے اور لوگوں کے کام پر واپس آنے سے معیشت میں مندی لوٹنے سے ممکن ہے بہتری آئے۔ لیکن مجھے لگتا ہے کہ حقیقی طور پر لیبر مارکیٹ کو مکمل طور پرلگے جھٹکے پر قابو پانے میں کچھ اور وقت لگے گا، مجھے یہ غیر یقینی لگتا ہے کہ اقتصادی حالات دوسری سہ ماہی کے آغاز میں ٹھیک ہونا شروع ہوسکتے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔