اسپین کے لا پالما جزیرے میں آتش فشاں پھٹنے سے 5 ہزار افراد کی نقل مکانی

اسپین کے وزیر اعظم پیڈرو سانچیز نے کہا کہ ’’ہم اس صورتحال کا اندازہ لگانے کے لیے کام کر رہے ہیں اور لا پالما میں آتش فشاں پھٹنے سے کیسے نمٹنا ہے۔ ہم ہر وقت شہریوں کی حفاظت کی ضمانت دیں گے‘‘۔

آتش فشاں، تصویر ویڈیو گریب
آتش فشاں، تصویر ویڈیو گریب
user

یو این آئی

میڈرڈ: ہسپانوی جزیرے لا پالما میں بڑے پیمانے پر آتش فشاں پھٹنے سے تقریباً 5 ہزار افراد اپنے گھروں کو چھوڑنے پر مجبور ہو گئے ہیں۔ ’دی سول گارڈ‘ نے گزشتہ روز ٹوئٹ کر کے بتایا کہ ’’اب تک 5000 افراد کو لاس لانوس ڈی اریڈین فٹ بال کے میدان میں منتقل کیا گیا ہے۔ فضائی حدود کھلی ہیں، ہوائی اڈے کی سرگرمیاں معمول کے مطابق جاری ہیں۔‘‘

اس سے قبل آتش فشاں انسٹی ٹیوٹ آف کینریز نے اتوار کو ہسپانوی جزیرے لا پالما میں آتش فشاں پھٹنے کی تصدیق کی تھی۔ قابل ذکر ہے کہ اسپین کے نیشنل جیوگرافک انسٹی ٹیوٹ نے اس علاقے میں ایک ہفتہ قبل زلزلہ کی سرگرمی ریکارڈ کی تھی۔ اس کی وجہ سے حکام نے حادثے سے پہلے لوگوں کو باہر نکالا تھا۔


اسپین کے وزیر اعظم پیڈرو سانچیز نے گزشتہ روز ہنگامی اجلاس کے بعد ٹوئٹ کیا کہ ’’ہم اس ہفتے اس صورتحال کا اندازہ لگانے کے لیے کام کر رہے ہیں اور لا پالما میں آتش فشاں پھٹنے سے کیسے نمٹنا ہے۔ ہم ہر وقت شہریوں کی حفاظت کی ضمانت دیں گے‘‘۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔