کابل میں ایندھن کی قیمتوں میں اضافے سے شہری پریشان

کابل کے رہائشی کا کہنا ہے کہ جو شخص روزانہ کام کرکے تھوڑا بہت کماتا ہے ، وہ ایک کلو گیس کیسے خرید سکتا ہےاور ملک میں کوئی کام نہیں ہے اوپر سے قیمتیں بڑھ رہی ہیں۔

فائل تصویر آئی اے این ایس
فائل تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

افغانستان پر طالبان کے قبضے کے بعد سے کابل میں ایندھن کی بڑھتی ہوئی قیمتوں کی وجہ سے مقامی باشندوں کو مسائل کا سامنا ہے اور وہ بے انتہا پریشان ہیں۔

مقامی باشندوں نے ٹولو نیوز کو بتایا کہ پچھلے ہفتے کے دوران گیس 15 افغان کرنسی فی کلوگرام اور تیل چار افغان کرنسی فی لیٹر تک بڑھ گیا ہے۔ مقامی باشندوں نے حکام سے ایندھن کی قیمتوں کو کنٹرول کرنے کی اپیل کی ہے۔


انہوں نے بتایا کہ اس وقت کابل میں ایک کلو گیس کی قیمت 75 افغانی کرنسی ہے۔ کابل کے رہائشی عبدالقیوم نے ٹولو نیوز کو بتایا کہ جو شخص روزانہ کام کرکے تھوڑا بہت کماتا ہے ، وہ ایک کلو گیس کیسے خرید سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کوئی کام نہیں ہے اور اوپر سے قیمتیں بڑھ رہی ہیں۔

میر واعظ ، ایک دکاندار نے بتایا کہ ہم 65 افغانی کرنسی میں فی کلو گیس خرید رہے ہیں اور اسے 75 افغانی کرنسی میں فروخت کر رہے ہیں۔ دریں اثنا ، ڈرائیور بھی تیل کی قیمت میں اضافے کی شکایت کر رہے ہیں۔ ایک ٹیکسی ڈرائیور عبدالہادی نے بتایا کہ 520 لیٹر تیل 320 سے 330 افغانی کرنسی میں خریدنا پڑتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مالی حالت اچھی نہیں ہے۔


شہری زیادہ ادائیگی کے مسئلے کا سامنا کر رہے ہیں اور حکومت پر زور دے رہے ہیں کہ وہ کمپنیوں اور ایندھن درآمد کنندگان کی من مانی بند کرے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔