آئی پی ایل 2021 کی سرگرمیاں شروع، 11 فروری کو کھلاڑیوں کی نیلامی متوقع

آئی پی ایل کے لیے کھلاڑیوں کی نیلامی کے سلسلے میں سابق ہندوستانی بلے باز برجیش پٹیل کی صدارت والی تین رکنی کمیٹی غوروخوض کر رہی ہے۔ اس کمیٹی میں سابق لیفٹ آرم اسپنر پرگیان اوجھا بھی شامل ہیں۔

آئی پی ایل ٹرافی، تصویر آئی اے این ایس
آئی پی ایل ٹرافی، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

ممبئی: کورونا وبا کے درمیان متحدہ عرب امارات (یو اے ای) میں انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) کے 13ویں ایڈیشن کے کامیاب انعقاد کے بعد 2021 میں اس کے اگلے ایڈیشن کو ہندوستان میں ہی منعقد کرنے کے سلسلے میں تیاریاں شروع ہو گئی ہیں جس کے لیے 11 فروری کو کھلاڑیوں کی نیلامی ہو سکتی ہے۔

آئی پی ایل کی گورننگ کونسل کی حالیہ ورچول میٹنگ ہوئی تھی لیکن آئی پی ایل کے 14 ویں ایڈیشن کے لیے تاریخوں اور میچ کے انعقاد کے لیے مقامات کے انعقاد کے سلسلے میں ابھی تک آخری فیصلہ نہیں کیا گیا ہے۔ حالانکہ ہندوستانی کرکٹ کنٹرول بورڈ (بی سی سی آئی) یہ واضح کر چکا ہے کہ 2021 آئی پی ایل میں آٹھ ٹیمیں ہی حصہ لیں گی۔

آئی پی ایل 2021 کے لیے کھلاڑیوں کی ایک دن کی نیلامی کا عمل کہاں ہو گا‘ اس بابت اب تک کوئی فیصلہ نہیں کیا گیا ہے۔ حالانکہ ہندوستان اور انگلینڈ کے مابین فروری میں ہونے والی ٹیسٹ سیریز کے پہلے اور دوسرے ٹیسٹ میچ کے بیچ اس نیلامی کا انعقاد کیا جائے گا۔ پہلا میچ پانچ سے نو فروری کے درمیان کھیلا جائے گا جبکہ دوسرا میچ 13 سے 17 فروری کے مابین میچ ہوگا۔

آئی پی ایل کے لیے کھلاڑیوں کی نیلامی کے سلسلے میں سابق ہندوستانی بلے باز برجیش پٹیل کی صدارت والی تین رکنی کمیٹی غوروخوض کر رہی ہے۔ اس کمیٹی میں سابق لیفٹ آرم اسپنر پرگیان اوجھا بھی شامل ہیں۔ ہندوستان میں کورونا وبا کے خطرے کے درمیان کھلاڑیوں کی نیلامی کا عمل یو اے ای میں منعقد کیا جا سکتا ہے۔

کورونا وبا کے سبب بڑھتے چیلنجز کے درمیان اس بات پر ہنوز بے یقینی قائم ہے کہ آئی پی ایل کے تمام میچوں کا انعقاد ہندوستان میں ہی کیا جائے یا کچھ میچ ہندوستان میں اور کچھ میچ بیرون ملک منعقد کیے جائیں۔ علاوہ ازیں ایک فکر یہ بھی ہے کہ ٹورنامنٹ کے دوران کھلاڑیوں کو کم از کم سفر کرنا پڑے‘ اس مقصد سے کچھ متعینہ مقامات پر ہی میچ منعقد کیے جائیں۔

فرنچائیزیوں کا ماننا ہے کہ میچ کے مقامات کے سلسلے میں فیصلہ جلد ہو جائے کیونکہ وہ اس وقت کھلاڑیوں کی فہرست تیار کرنے میں مصروف ہیں کہ کسے ٹیم میں شامل کیا جائے یا کسے نہیں۔ کھلاڑیوں کی نیلامی کا عمل شروع ہونے سے قبل فرنچائیزیوں کو اس بات پر آخری فیصلہ کرنا ہوگا۔

آئی پی ایل 2021 کی نیلامی میں تمام فرنچائیزی کے پاس رائٹ ٹو میچ (آر ٹی ایم) آپشن مہیا ہوگا‘ اس کے ذریعے تمام ٹیمیں اہم کھلاڑیوں کو ٹیم میں حسب سابق رکھ سکتی ہیں۔ اس کا استعمال نیلامی کے دوران دوسری ٹیم میں جا چکے کھلاڑی کو واپس پانے کے لیے کیا جاتا ہے۔

آئی پی ایل کے اگلے ایڈیشن کے لیے تمام ٹیموں کی نیلامی پرس کو تین کروڑ روپیے بڑھایا جا سکتا ہے۔ آئی پی ایل کے اگلے سیزن سے قبل ٹیموں کے پاس باقی ماندہ رقم کی بات کریں تو چنئی سپر کنگس کے پاس پرس میں محض 0.15 کروڑ روپیے بچے تھے جبکہ کنگس الیون پنجاب کے پاس 16.5 کروڑ روپیے کا سب سے بڑا بیلنس ہے۔

باقی ٹیموں کے پرس بیلنس کی بات کی جائے تو راجستھان رائلس (14.75 کروڑ)، سن رائزرس حیدرآباد (10.1 کروڑ)، دہلی کیپیٹلس (9 کروڑ) کولکاتا نائٹ رائیڈرس (8.5 کروڑ)، رائل چیلنجرس بنگلور (6.4 کروڑ) اور ممبئی انڈینس کے پاس (1.95 کروڑ) کی رقم بچی ہوئی ہے۔ حالانکہ ٹیمیں اپنا پرس مزید بڑھا سکتی ہیں جب ٹیم کھلاڑیوں کو ریلیز کریں گی تو ان کی پرس رقم میں اضافہ ہوگا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔