وقت کی اہم ضرورت ہے بین الاقوامی ٹیکس ڈھانچے کی اصلاح: سی بی ڈی ٹی چیئرمین

صنعتی ادارہ فکی کے زیر اہتمام ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سی بی ڈی ٹی چیئرمین موہ پاترا نے کہا کہ ہندوستان کا بین الاقوامی ٹیکس ڈھانچہ اور طریقہ کار بریکس اور کاروبار کے مارٹر ماڈل جیسا ہے۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

نئی دہلی: سینٹرل بورڈ آف ڈائریکٹ ٹیکس (سی بی ڈی ٹی) کے چیئرمین جے بی موہ پاترا نے بین الاقوامی ٹیکس ڈھانچے میں اصلاح کی ضرورت بتاتے ہوئے کہا ہے کہ ہندوستانی کاروبار کو عالمی ٹیکسوں کے مطابق بنانے کے عمل کو ملتوی نہیں کیا جا سکتا۔

صنعتی ادارہ فکی کے زیر اہتمام ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے، موہ پاترا نے کہا کہ ہندوستان کا بین الاقوامی ٹیکس ڈھانچہ اور طریقہ کار بریکس اور کاروبار کے مارٹر ماڈل جیسا ہے۔ کاروبار کرنے کے تیزی سے بدلتے ہوئے طریقے اپنائے گئے ہیں لیکن اب اسے آنے والے وقت کے ساتھ ہم آہنگ کرنے کے لیے تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ کثیر سطحی تعاون کے لیے فریم ورک معاہدے موجود ہیں۔


موہ پاترا نے کہا کہ بی ای پی ایس کے ستون ایک اور ستون دو پر بات چیت جاری ہے اور جلد ہی ٹیکس کے معاملے میں موقف واضح ہو جائے گا۔ موہ پاترا نے کہا کہ اس سے ہندوستان کے محصول کے ہدف کو حاصل کرنے میں مدد ملے گی۔ ہندوستان ستون 2 سے ہی 50 بلین ڈالر کی آمدنی حاصل ہوسکتی ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔