کورونا کے ساتھ ’مہنگائی کا وائرس‘ بھی بے قابو، پٹرول کے داموں میں لگاتار چھٹے دن اضافہ

انڈین آئل کی ویب سائٹ کے مطابق دہلی، کولکاتا، ممبئی اور چنئی میں پٹرول کی قیمت بالترتیب 81.73 روپے، 83.24 روپے، 88.39 روپے اور 84.73 روپے فی لیٹر ہو گئی۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

کورونا کے دور میں ملک کے عوام پر مہنگائی کی مار بھی جاری ہے۔ منگل کے روز مسلسل چھٹے دن پٹرول کی قیمتوں میں اضافہ جاری رہا، جب کہ ڈیزل کی قیمتوں میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی ہے۔ دوسری جانب بین الاقوامی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمتوں میں مسلسل تیسرے اجلاس میں استحکام رہا۔ آئل مارکیٹنگ کمپنیوں نے منگل کے روز دہلی، کولکاتا اور ممبئی میں پٹرول کی قیمتوں میں 11 پیسے اور چنئی میں 9 پیسے فی لیٹر کا اضافہ کیا۔

انڈین آئل کی ویب سائٹ کے مطابق دہلی، کولکاتا، ممبئی اور چنئی میں پٹرول کی قیمت بالترتیب 81.73 روپے، 83.24 روپے، 88.39 روپے اور 84.73 روپے فی لیٹر ہو گئی۔ تاہم، چاروں میٹرو سٹیز میں ڈیزل کی قیمت بالترتیب 73.56، 77.06 روپے، 80.11 روپے اور 78.86 روپے فی لیٹر پر مستحکم ہے۔ پٹرول کی قیمت میں 10 دنوں میں صرف ایک دن کو چھوڑ کر باقی نو دن تک لگاتار اضافہ کیا گیا، جس کے سبب راجدھانی میں پٹرول 1.30 روپے فی لیٹر مہنگا ہو گیا ہے۔

ادھر، بین الاقوامی فیوچر مارکیٹ انٹر کانٹی نینٹل ایکسچینج (آئی سی ای) پر برینٹ کروڈ کے نومبر کے ترسیلی معاہدہ میں گزشتہ سیشن کے مقابلے میں 0.22 فیصد اضافے کے ساتھ 45.74 ڈالر فی بیرل پر کاروبار چل رہا ہے۔ جبکہ امریکی لائٹ کروڈ ویسٹ ٹیکساس انٹرمیڈیت (ڈبلیو ٹی آئی) کے اکتوبر ڈلیوری فیوچر معاہدہ میں گزشتہ سیشن کے مقابلے 0.07 فیصد کی کمزوری کے ساتھ 42.59 ڈالر فی بیرل پر تجارت کی جا رہی ہے۔

Published: 25 Aug 2020, 12:11 PM
next