علیحدگی انتہائی ذاتی معاملہ ہے جس پر میں کچھ نہیں کہہ سکتا: نواز الدین صدیقی

نواز الدین کا کہنا ہے کہ ان کو اپنے بچوں کی بہت زیادہ فکرہے، میں اپنے بچوں کوبہت پیار کرتا ہوں اور میں نہیں چاہتا کہ جو کچھ ہو رہا ہے اس سے ان کو کوئی بھی تکلیف پہنچے۔

نواز الدین صدیقی، تصویر آئی اے این ایس
نواز الدین صدیقی، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

سبھاش کے جھا

بالی ووڈ اداکار نواز الدین صدیقی علیحدگی کے انتہائی نازک اور پیچدہ مسئلہ سے گزر رہے ہیں لیکن اس سب کے بیچ انہوں نے خود ذہنی توازن ٹھیک رکھا ہے اور وہ کوئی بھی بات جذبات میں نہیں کر رہے ہیں۔ علیحدگی کے معاملہ پر کچھ بھی بولنے کے لئے نہیں تیار نواز الدین کہتےہیں’’جس دور سے میں گزر رہا ہوں وہ ایک انتہائی ذاتی معاملہ ہے اور نہ تو میں اس معاملہ پر پبلک میں بات کر سکتا ہوں اور نہ ہی کروں گا۔ اس سارے معاملہ میں خاندان ملوث ہیں، زندگیاں داؤ پر لگی ہوئی ہیں جن میں میرے بچے بھی شامل ہیں جو یہ نہیں سمجھتے کہ یہ سب کیا ہو رہا ہے۔‘‘

نواز الدین کا کہنا ہے کہ ان کو اپنے بچوں کی بہت زیادہ فکرہے، میں اپنے بچوں کوبہت پیار کرتا ہوں اور میں نہیں چاہتا کہ جو کچھ ہو رہا ہے اس سے ان کو کوئی بھی تکلیف پہنچے۔ ان کی فلاح و بہبود اور ان کے مستقبل کو یقینی بنانا ہی میری سب سے اہم اور بڑی ترجیحات ہے۔‘‘

واضح رہے سال 2009 میں نواز الدین کی شادی انجلی سے ہوئی تھی اور انجلی نے شادی کے بعد اپنا نام عالیہ رکھا تھا۔ اس سال کی ابتدا میں دونوں کے درمیان اختلافات اتنے بڑھے کہ دونوں نے علیحدگی کا فیصلہ کرلیا۔ ان کے دو بچے ہیں۔ بیٹی کا نام شورا ہے اور بیٹے کا نام ینی ہے۔ اس سے پہلے ایک ملاقات میں نواز الدین نے اپنی اس رائے کا اظہار کیا تھا کہ وہ نہیں چاہتے کہ ان کی بیٹی کبھی فلموں میں اداکاری کرے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


next