اداکار نوازالدین صدیقی مظفر نگر میں لگائیں گے 5 ہزار نیم کے درخت، شجرکاری شروع

نوازالدین صدیقی گزشتہ اتوار کی صبح تقریباً ساڑھے گیارہ بجے اپنے بھائی فیض الدین کے ساتھ صفی پور گاؤں واقع فارم ہاؤس پہنچے اور نیم کا درخت لگا کر شجرکاری کا سلسلہ شروع کیا۔

نیم کا درخت لگاتے ہوئے نوازالدین صدیقی
نیم کا درخت لگاتے ہوئے نوازالدین صدیقی
user

آس محمد کیف

بالی ووڈ فلم اداکار نوازالدین صدیقی نے مظفر نگر میں شجرکاری کا عمل شروع کیا ہے جس کی خوب تعریف ہو رہی ہے۔ گزشتہ 20 جون کو نوازالدین نے نیم کا درخت لگا کر شجرکاری کا آغاز کیا اور آنے والے دنوں میں نیم کے 5 ہزار درخت لگانے کا عزم ظاہر کیا۔ کورونا بحران میں اپنے آبائی گھر بڈھانا میں اپنے اہل خانہ کے ساتھ نوازالدین صدیقی نے ذاتی فارم ہاؤس پہنچ کر نیم کا درخت لگانے کا سلسلہ شروع کیا۔ اس موقع پر نوازالدین صدیقی نے کہا کہ ’’بلڈنگ بنانے سے نہیں بلکہ درخت لگانے سے ترقی ہوتی ہے۔‘‘

نوازالدین صدیقی گزشتہ اتوار کی صبح تقریباً ساڑھے گیارہ بجے اپنے بھائی فیض الدین کے ساتھ صفی پور گاؤں واقع فارم ہاؤس پہنچے۔ اس موقع پر انھوں نے کورونا بحران میں آکسیجن کی کمی سے ہلاک ہونے والے لوگوں کے تئیں ہمدردی کا اظہار کیا اور کہا کہ ہمیں شجرکاری کی طرف توجہ دینی ہوگی، ہمیں ماحولیات کو بہتر بنانا ہوگا۔ نوازالدین نے خود بھی ایک سال میں پانچ ہزار درخت لگانے کا ہدف رکھا اور کہا کہ فارم ہاؤس سے اس پروگرام کی شروعات ہوئی ہے اور دھیرے دھیرے اس پروگرام کے تحت سرکاری احاطہ قصبہ، تھانہ، تحصیل وغیرہ میں درخت لگائے جائیں گے۔ نوازالدین صدیقی نے فضائی آلودگی کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت شجرکاری بہت اہم ہے۔ ملک کی ترقی صرف بلڈنگ بنانے سے نہیں بلکہ درخت لگانے سے بھی ہوگی۔ درخت سے ہمیں آکسیجن ملتا ہے، آکسیجن کے بغیر ہماری زندگی کا تصور نہیں کیا جا سکتا۔

اداکار نوازالدین صدیقی مظفر نگر میں لگائیں گے 5 ہزار نیم کے درخت، شجرکاری شروع

اس موقع پر نوازالدین صدیقی نے اپنے شیدائیوں سے بھی بات چیت کی اور ان کی محبتوں کے لیے شکریہ ادا کیا۔ ایک ایک کر کے انھوں نے اپنے چاہنے والوں کے ساتھ سیلفی بھی لی۔ اس دوران نوازالدین صدیقی کو سبکدوش ٹیچر راجویر سنگھ ملک نے اپنی طرف سے ان کی سوانح کو ایک نظم کی شکل میں تیار کر کے بطور تحفہ پیش کیا۔ پھر نواز الدین نے کہا کہ ’’ممبئی میری کرم بھومی ہے اور بڈھانا میری جنم بھومی۔ جب بھی مجھے وقت ملتا ہے میں اپنے گاؤں کی جانب رخ کر لیتا ہوں۔ مجھے یہاں آ کر عام زندگی گزارنا اور جھونپڑی میں رہنا ایک سکون کا احساس دلاتا ہے۔‘‘

نوازالدین صدیقی نے بات چیت کے دوران کورونا انفیکشن سے بچنے کے لیے کووڈ ضابطوں پر سختی کے ساتھ عمل کرنے کی اپیل بھی لوگوں سے کی۔ انھوں نے کہا کہ ہمیں اس وبا سے بچنے کے لیے دو گز کی دوری، ماسک و سینیٹائزر وغیرہ کا استعمال کرنا چاہیے۔ بہت ضروری کام سے ہی گھر سے باہر نکلنا چاہیے۔ انھوں نے ٹیکہ کاری پر زور دیتے ہوئے کہا کہ سبھی کو اس وبا سے بچنے کے لیے ٹیکہ لگوانا چاہیے اور دوسروں کو بھی ٹیکہ لگوانے کے لیے ترغیب دینی چاہیے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔