پاکستانی حکومت لوگوں سے چائے کم پینے کی گزارش کیوں کر رہی؟

بی بی سی کی ایک رپورٹ کے مطابق پاکستانی وزیر احسان اقبال نے کہا ہے کہ ایک دن میں کم مقدار میں چائے پینے سے پاکستان کی اعلیٰ درآمداتی بلوں میں تخفیف ہوگی۔

چائے، تصویر آئی اے این ایس
چائے، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

پاکستان میں لوگوں سے چائے کی مقدار کم کرنے کو کہا گیا ہے تاکہ ملک کی معیشت کو بچائے رکھا جا سکے۔ بی بی سی کی ایک رپورٹ کے مطابق پاکستانی وزیر احسان اقبال نے کہا ہے کہ ایک دن میں کم مقدار میں چائے پینے سے پاکستان کی اعلیٰ درآمداتی بلوں میں تخفیف ہوگی۔ پاکستان میں کم فوریکس ریزرو (موجودہ وقت میں سبھی درآمدات دو مہینے سے بھی کم وقت کے لیے بچا ہے) نے اسے پیسے کی فوری ضرورت کے تحت چھوڑ دیا ہے۔ پاکستان دنیا کا سب سے بڑا چائے درآمد کرنے والا ملک ہے جس نے گزشتہ سال 600 ملین ڈالر سے زیادہ قیمت کی چائے خریدی تھی۔

پاکستانی میڈیا کے مطابق اقبال نے کہا کہ ’’میں ملک سے چائے کے خرچ میں ایک سے دو کپ کی تخفیف کرنے کی اپیل کرتا ہوں۔ ایسا اس لیے کیونکہ ہم چائے کی درآمدات قرض پر کرتے ہیں۔‘‘ انھوں نے مشورہ دیا کہ کاروباری بھی بجلی بچانے کے لیے ساڑھے آٹھ بجے رات تک بازار کے اپنے اسٹالوں کو بند کر سکتے ہیں۔


بی بی سی کی ایک رپورٹ کے مطابق پاکستان کے فوریکس ریزرو میں تیزی سے گراوٹ جاری ہے۔ اعلیٰ درآمدات کی لاگت میں تخفیف اور ملک میں رقم رکھنے کے لیے حکومت پر دباؤ ڈالنے کے بعد عرضی آئی۔ پاکستان کا فوریکس ریزرو فروری میں تقریباً 16 ارب ڈالر سے گر کر جون کے پہلے ہفتہ میں 10 ارب ڈالر سے بھی کم ہو گیا، جو اس کی سبھی درآمدات کے دو مہینے کی لاگت کو کور کرنے کے لیے بمشکل مناسب تھا۔ گزشتہ مہینے کراچی میں افسران نے دولت کے دفاع کے لیے اپنی بولی کے حصے کی شکل میں درجنوں غیر ضروری لکژری سامانوں کی درآمدات پر پابندی عائد کر دی تھی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔