پاکستان: سابق چیف جسٹس کی لیک ویڈیو کو عمران خان نے ڈرامہ قرار دیا

عمران خان نے کہا کہ سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی لیک ہونے والی آڈیو ٹیپ ایک 'ڈرامہ' ہے اور اس کی شروعات پنامہ پیپرز کے بعد تب شروع ہوئی، جب سے شریف خاندان کرپشن پیپرز میں بے نقاب ہوئے۔

عمران خان، تصویر آئی اے این ایس
عمران خان، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

اسلام آباد: پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے سابق چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سابق وزیر اعظم نواز شریف کو سزا سنائے جانے کے حوالے سے ایک اور شخص سے حالیہ گفتگو کے لیک ہونے والے آڈیو کلپ کو ڈرامہ قرار دیا ہے۔ پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے بدھ کو ’ کامیاب جوان کانفرنس‘ میں کہا کہ سابق چیف جسٹس ثاقب نثار کی لیک ہونے والی آڈیو ٹیپ ایک 'ڈرامہ' ہے اور اس کی شروعات پنامہ پیپرزکے بعد تب شروع ہوئی، جب سے شریف خاندان کرپشن پیپرز میں بے نقاب ہوئے۔

پاکستان کے سابق وزیر اعظم نواز شریف نے حال ہی میں عاصمہ جہانگیر کانفرنس میں عمران خان حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا تھا، جس کا حوالہ دیتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ’’لاہور میں ایک تقریب کا اہتمام کیا گیا تھا، جس میں چیف جسٹس اور سپریم کورٹ کے ججز کو شرکت کی دعوت دی گئی تھی۔ لیکن کیا آپ جانتے ہیں کہ اس پروگرام سے خطاب کس نے کیا؟ وہ شخص جسے خود سپریم کورٹ نے سزا سنائی اور جو ملک سے فرار ہو گیا۔ یہ بدقسمتی کی بات ہے‘‘۔


انہوں نے چیف جسٹس آف پاکستان اور مسٹر شریف کو ایک ساتھ ایک ہی تقریب میں مدعو کرنے پر منتظمین کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ یہ بدقسمتی کی بات ہے کہ چیف جسٹس آف پاکستان اور ایک مجرم (نواز شریف) کو ایک ہی تقریب میں تقریر کرنے کے لیے مدعو کیا گیا۔

انہوں نے پنامہ پیپرز پر مریم نواز کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ آپ عدالتوں کو برا کہہ سکتے ہیں، فوج کو برا کہہ سکتے ہیں اور مجھے پہلے بھی برا کہا جا چکا ہے لیکن جواب دیں کہ آپ ان اپارٹمنٹس کو برا کہیں، آپ کے پاس اسے خریدنے کے پیسے کہاں سے آئے؟

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔