پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان پر قاتلانہ حملہ

ریحام خان نے عمران حکومت کو ہدف تنقید بناتے ہوئے سوال کیا کہ کیا یہ عمران خان کا نیا پاکستان ہے؟ لالچی، بزدلوں اور ٹھگوں کی سرزمین میں خوش آمدید۔

ریحام خان، تصویر آئی اے این ایس
ریحام خان، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

اسلام آباد: پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کی سابق اہلیہ (طلاق شدہ) ریحام خان پر اتوار کو دیر رات گئے ایک شادی کی تقریب سے واپس آتے ہوئے کار پر حملہ کیا گیا۔ اس حملے کے بعد م ریحام نے ٹوئٹ کر کے یہ اطلاع دی۔ انہوں نے بتایا کہ اپنے بھتیجے کی شادی سے واپس آتے ہوئے دو موٹر سائیکل سواروں نے میری کار پر گولیاں چلائیں جس میں وہ بال بال بچ گئی۔ ریحام نے عمران حکومت کو ہدف تنقید بناتے ہوئے سوال کیا کہ کیا یہ عمران خان کا نیا پاکستان ہے؟ لالچی، بزدلوں اور ٹھگوں کی سرزمین میں خوش آمدید۔

ریحام نے ٹوئٹ کیا کہ "صبح کے نو بج چکے ہیں، میرے پرسنل سکریٹری اور میری پوری ٹیم رات بھر ایک منٹ بھی نہیں سوئی اور ہماری ایف آئی آر شمس کالونی تھانے اسلام آباد میں درج ہونا باقی ہے۔ تفتیش جاری ہے اور ابھی تک ہم ایف آئی آر کی کاپی ملنے کا انتظار کر رہے ہیں۔ اندازہ لگائیں کہ یہاں کام کی رفتار کس حد تک سست ہے۔ ہم ساری رات جاگتے رہے کیونکہ پولیس کچھ کرنے کی بجائے متاثرہ سے ہی سوال و جواب میں مصروف تھی۔


واضح رہے کہ ریحام اور پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے 2015 میں شادی کی تھی لیکن اسی سال دونوں میں طلاق ہوگئی تھی۔ ریحام نے 2018 میں شائع ہونے والی اپنی سوانح عمری میں عمران خان پر کئی سنگین الزامات لگائے تھے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔