سری لنکا میں جاری بحران کے درمیان رانل وکرم سنگھے نے وزیر اعظم عہدہ کا لیا حلف

ایک دن قبل ملک کو خطاب کرتے ہوئے صدر گوٹبایا نے اعلان کیا تھا کہ سابق وزیر اعظم مہندا راج پکشے اور ان کی حکومت کے ذریعہ خالی کیے گئے عہدوں کو جلد بھرا جائے گا۔

رانل وکرم سنگھے
رانل وکرم سنگھے
user

قومی آوازبیورو

سنگین سیاسی اور معاشی بحران میں پھنسے سری لنکا کے اقتدار میں بڑی تبدیلی دیکھنے کو ملی ہے۔ سابق وزیر اعظم رانل وکرم سنگھے نے ملک کے نئے وزیر اعظم کی شکل میں حلف لے لیا ہے۔ انھیں صدر گوٹبایا راج پکشے نے عہدہ کا حلف دلایا۔ دو دن پہلے سابق وزیر اعظم مہندا راج پکشے کے استعفیٰ کے بعد سابق وزیر اعظم رانل وکرم سنگھے کو ملک کی کمان سونپنے کا فیصلہ لیا گیا تھا۔

کھانا، ایندھن، دوا، رسوئی گیس اور گھنٹوں بجلی تخفیف سمیت ضروری چیزوں کی کمی سے جڑے سنگین مالی بحران کے درمیان مظاہرین راج پکشے حکومت اور صدر کے استعفیٰ کا مطالبہ کر رہے تھے۔ حکومت حامیوں اور حکومت مخالف مظاہرین کے درمیان پرتشدد تصادم کے بعد دو دن پہلے سابق وزیر اعظم مہندا راج پکشے نے اپنے عہدہ سے استعفیٰ دے دیا تھا اور کنبہ سمیت کولمبو چھوڑ دیا تھا۔


اس کے بعد پیدا ہوئے سیاسی ماحول کے درمیان بدھ کی شب صدر نے ملک کو خطاب کرتے ہوئے اعلان کیا کہ ان کے بھائی مہندا اور ان کی حکومت کے ذریعہ خالی کیے گئے عہدوں کو جلد بھرا جائے گا۔ گوٹبایا نے یہ بھی کہا کہ وہ کارگزار سربراہ کی 19ویں ترمیم کی طاقتوں کو پھر سے شروع کرنے پر کام کریں گے، جو انھیں خود حاصل ہے اور پارلیمنٹ کو زیادہ طاقت فراہم کریں گے۔

صدر گوٹبایا نے صدر نظام کو ختم کرنے پر بھی اتفاق ظاہر کیا۔ گوٹبایا راج پکشے نے کہا کہ نئی حکومت ایک ایسے وزیر اعظم کے ذریعہ چلائی جائے گی جو پارلیمنٹ میں اکثریت حاصل کر سکے۔ اس کے ایک دن بعد آج گوٹبایا نے رانل وکرم سنگھے کو وزیر اعظم مقرر کرنے کا اعلان کیا اور شام میں انھیں اس عہدہ کا حلف بھی دلا دیا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔