ہندوستان نے برطانیہ کو دیا جھٹکا، کامن ویلتھ گیمز سے اپنا نام واپس لیا!

آئندہ مہینے ہندوستان میں شروع ہونے جا رہے جونیئر ہاکی عالمی کپ سے انگلینڈ نے اپنا نام واپس لیا تھا، اور اب ہندوستان نے بھی سخت قدم اٹھاتے ہوئے انگلینڈ میں ہونے والے کامن ویلتھ گیمز سے نام واپس لے لیا

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

تنویر

کورونا وائرس کے دور میں برطانیہ نے ہندوستان کو لے کر جو ضابطے تیار کر رکھے ہیں، اس کو لے کر لگاتار تنازعہ چل رہا ہے۔ اب ہندوستانی ہاکی ٹیم نے آئندہ سال برطانیہ میں ہونے والے کامن ویلتھ گیمز سے اپنا نام واپس لے کر برطانیہ کو زوردار جھٹکا دیا ہے۔ دراصل برطانیہ میں کورونا کے بڑھتے معاملوں اور وہاں کے سنگین حالات کی وجہ سے ہندوستانی مرد اور خاتون ہاکی ٹیم نے فیصلہ لیا ہے کہ وہ کامن ویلتھ گیمز میں حصہ نہیں لیں گی۔

یہاں دلچسپ بات یہ ہے کہ آئندہ مہینے ہندوستان کے اڈیشہ میں شروع ہونے جا رہے جونیئر ہاکی عالمی کپ سے انگلینڈ نے اپنا نام واپس لیا تھا۔ انگلینڈ نے حوالہ دیا تھا کہ حکومت ہند کے ذریعہ انگلینڈ کے باشندوں کے لیے 10 دنوں کا کوارنٹائن پیریڈ رکھا گیا ہے اور ایسے میں وہ اپنا نام واپس لے رہے ہیں۔ انگلینڈ جونیر ٹیم کے اس فیصلے کے 48 گھنٹے کے اندر ہی ہندوستان نے آئندہ سال ایشین گیمز کو لے کر اپنا فیصلہ صادر کر دیا۔


ہاکی انڈیا کی طرف سے منگل کے روز ایک بیان جاری کیا گیا ہے جس میں لکھا گیا ہے کہ پورے یوروپ میں انگلینڈ کورونا سے سب سے زیادہ متاثر ملک ہے، ایسے میں آئندہ سال وہاں کامن ویلتھ گیمز میں حصہ لینا مناسب نہیں ہوگا۔ قابل ذکر ہے کہ کامن ویلتھ گیمز آئندہ سال 28 جولائی سے 8 اگست کے درمیان کھیلے جائیں گے۔

یہاں قابل غور ہے کہ ہندوستانی ٹیم کا یہ فیصلہ ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب انگلینڈ نے ہندوستانیوں کے لیے 10 دن کا کوارنٹائن فکس کیا ہوا ہے۔ ہاکی انڈیا نے صاف کر دیا ہے کہ ان کی ٹیم کا فوکس پوری طرح سے ایشین گیمز پر ہے جو کہ 2024 پیرس اولمپک کی تیاریوں کو دیکھتے ہوئے بہت اہم ہے۔ ایشین گیمز آئندہ سال ستمبر ماہ میں چین میں کھیلے جائیں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔