یوگی کا رام راج: بی جے پی رکن اسمبلی کو پولیس نے پیٹا، کپڑے بھی پھاڑے!

رکن اسمبلی نے کہا، ’’ایس او نے ایک معاملہ میں پیسہ لے کر کارروائی کی۔ آج میں بات کرنے آیا تو تین تین داروغہ مجھے مارنے کے لئے دوڑے اور میرے کپڑے پھاڑ دیئے۔‘‘

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

عمران

علی گڑھ: اتر پردیش میں رام راج ہونے کا دعوی کرنے والے یوگی آدتیہ ناتھ کی حکومت میں بی جے پی کے رکن اسمبلی کو پولیس والوں نے پیٹ دیا۔ علی گڑھ کی اگلاس سیٹ سے رکن اسمبلی راج کمار سہیوگی کے ساتھ یہ واقعہ بدھ کے روز پیش آیا۔ مار پیٹ کے بعد رکن اسمبلی نے کہا کہ انہیں انصاف چاہیے۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق رکن اسمبلی کسی معاملہ میں پولیس سے بات کرنے گئے تھے۔ مار پیٹ کے واقعہ کے بعد انہوں نے مقامی صحافیوں سے بات چیت کی۔ رکن اسمبلی نے کہا کہ ’’ایس او نے ایک معاملہ میں پیسہ لے کر کارروائی کی۔ آج میں بات کرنے آیا تو تین تین داروغہ مجھے مارنے کے لئے دوڑے اور میرے کپڑے پھاڑ دیئے۔‘‘

پولیس سے مار پیٹ کے الزام پر رکن اسمبلی نے کہا کہ یہ الزام غلط ہے۔ صحافیوں کے یہ پوچھنے پر کہ وہ اب کیا چاہتے ہیں، رکن اسمبلی نے کہا ’‘انصاف چاہتے ہیں۔ عوام اور کارکنان کے ساتھ انصاف ہوگا تبھی ہم مانیں گے، ایسے ہم ماننے والے نہیں۔‘‘

اس واقعہ کے بعد تھانہ کے باہر رکن اسمبلی کے حامیوں کی بھاری بھیڑ اکٹھا ہو گئی اور پولیس فورس کی بھی بڑی تعداد وہاں پہنچ گئی۔ اس کے بعد حالات کشیدہ نظر آئے۔ رکن اسمبلی نے کہا کہ ایس او نے ایک معاملہ میں پیسہ لے کر کارروائی کی ہے، یہ بے حد سنگین مسئلہ ہے۔ برسر اقتدار جماعت کے رکن اسمبلی پولیس افسر پر پیسہ لے کر کارروائی کرنے کا الزام عائد کریں گے تو سوال سیدھے حکومت پر کھڑے ہونگے۔

اتر پردیش میں حالیہ وقت میں بی جے پی کے کئی رہنما اور ارکان پارلیمنٹ سرکاری نظام اور افسر شاہی کے حوالہ سے اپنی شکایت درج کرا چکے ہیں۔ ہردوئی سیٹ سے بی جے پی کے رکن پارلیمنٹ بنے جے پرکاش راوت نے حال ہی میں فیس بک پوسٹ لکھ کر یوگی حکومت کو اشاروں میں منتبہ کیا تھا کہ وہ عوامی نمائندگان کی دقتوں کو سمجھیں۔ رکن پارلیمنٹ نے کہا تھا کہ تیس سال کے سیاسی سفر میں انہوں نے کبھی ایسی بے بسی محسوس نہیں کی۔

Published: 13 Aug 2020, 8:32 AM
next