مدھیہ پردیش میں یوگی حکومت کے ’آبادی کنٹرول قانون‘ کی ضرورت نہیں: وزیر برائے شہری ترقی

مدھیہ پردیش کے وزیر برائے شہری ترقی اور رہائش او پی ایس بھدوریا کا کہنا ہے کہ ’’یو پی اور مدھیہ پردیش کے حالات میں بہت فرق ہے۔ مدھیہ پردیش میں آبادی پر کنٹرول سے متعلق قانون کی ضرورت نہیں ہے۔‘‘

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

مدھیہ پردیش کی شیوراج حکومت نے اتر پردیش کے طرز پر ’لو جہاد‘ قانون لانے کے لیے ڈرافٹ ضرور تیار کر لیا ہے، لیکن یوگی حکومت کے ذریعہ نافذ ’آبادی کنٹرول قانون‘ کو مدھیہ پردیش میں نافذ کرنے کو تیار نظر نہیں آ رہی ہے۔ اس سلسلے میں مدھیہ پردیش کے وزیر برائے شہری ترقی اور رہائش او پی ایس بھدوریا کا ایک بیان سامنے آیا ہے جس میں انھوں نے کہا ہے کہ مدھیہ پردیش کو ایسے قانون کی ضرورت نہیں، بلکہ لوگوں میں بیداری پیدا کر کے آبادی کو قابو میں کیا جا سکتا ہے۔

ضلع انچارج بھدوریا نے رتلام میں صحافیوں سے گفتگو کے دوران یہ بیان دیا۔ انہوں نے آبادی پر کنٹرول کرنے سے متعلق قانون کے سلسلے میں پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ ’’اتر پردیش اور مدھیہ پردیش کے حالات میں بہت فرق ہے۔ مدھیہ پردیش میں آبادی پر کنٹرول سے متعلق قانون کی ضرورت نہیں ہے۔‘‘ انہوں نے مزید کہا کہ ’’آبادی پر قابو ضرور پایا جانا چاہئے ، ہر ایک اس بات پر متفق ہے۔ لوگوں میں بیداری پھیلا کر اس پر قابو پایا جاسکتا ہے۔‘‘

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


Published: 22 Jul 2021, 9:13 PM