مرکزی حکومت کی غلط پالیسیوں سے مہنگائی میں ہوا اضافہ: اشوک گہلوت

اشوک گہلوت نے کہا کہ مہنگائی کا مسئلہ نیا نہیں ہے، مرکز کی غلط مالی پالیسیوں کی وجہ سے مہنگائی میں اضافہ ہوا ہے۔

اشوک گہلوت، تصویر ٹوئٹر @ashokgehlot51
اشوک گہلوت، تصویر ٹوئٹر @ashokgehlot51
user

یو این آئی

جے پور: راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت نے مرکزی حکومت پر مہنگائی پر قابو پانے میں ناکام رہنے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ اس کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے مہنگائی میں اضافہ ہوا ہے۔ اشوک گہلوت نے آج یہاں ایک پریس کانفرنس میں یہ بات کہی۔

انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے نظام خراب ہو رہا ہے اور اس کی وجہ سے یہ سب ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مہنگائی کا مسئلہ نیا نہیں ہے، مرکز کی غلط مالی پالیسیوں کی وجہ سے مہنگائی میں اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ فی الحال پانچ ریاستوں میں ہونے والے الیکشن کی وجہ سے ڈیزل اور پٹرول کی قیمتیں ہر روز نہیں بڑھ رہی ہیں۔ جب الیکشن کے نام پر کمپنیوں کو قیمتیں بڑھانے سے روکا جا سکتا ہے تو ہمیشہ کیوں نہیں؟ انہوں نے کہا کہ ایکسائز ڈیوٹی کی رقم ریاستوں میں تقسیم ہوتی تھی، لیکن اب ایسا نہیں ہو رہا ہے۔


اشوک گہلوت نے کہا کہ ملک کی ترقی مضبوط ریاستوں سے ہی ممکن ہوگی، لیکن ریاستوں کو ان کا حصہ نہیں مل رہا ہے۔ مرکز نے جی ایس ٹی کی رقم روک دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مہنگائی کا سیدھا اثر عام آدمی پر پڑتا ہے، لوگوں کی جیبیں خالی ہو رہی ہیں، مرکزی حکومت مہنگائی اور بے روزگاری کے مسئلہ پر بات نہیں کرتی۔ انہوں نے کہا کہ مودی حکومت کے سات سالوں میں مہنگائی آسمان کو چھو رہی ہے، مرکزی حکومت نے اسے روکنے کی کوئی کوشش نہیں کی۔ تیل گیس، سبزی، پٹرول اور ڈیزل کی قیمتیں آسمان کو چھو رہی ہیں۔

اشوک گہلوت نے کہا کہ ہم نے مرکزی حکومت سے درخواست کی ہے کہ راجستھان کی جغرافیائی صورتحال مختلف ہے، ریاستوں کے جی ایس ٹی کے حصہ میں اضافہ کیا جائے۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ کانگریس صدر سونیا گاندھی اور اس کے لیڈر راہل گاندھی نے 12 دسمبر کو نئی دہلی میں مہنگائی کے خلاف ریلی نکالنے کا صحیح فیصلہ کیا ہے اور مرکزی حکومت کے خلاف ریلی نکالنے کا مقصد یہ ہے کہ مرکز پر مہنگائی اور بے روزگاری ختم کرنے کے لیے دباؤ بنایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ مہنگائی سے ہر کوئی متاثر ہے، اس لیے دہلی میں ہونے والی ریلی میں شرکت کے لیے جوش و خروش ہے۔


ریاستی کانگریس کے صدر گووند سنگھ ڈوٹاسرا نے کہا کہ مہنگائی آسمان کو چھو رہی ہے۔ ڈیزل، پٹرول، کھانے پینے کی اشیاء سمیت گھریلو اشیاء مہنگی ہو رہی ہیں۔ دو وقت کی روٹی بھی عام آدمی کی پلیٹ تک نہیں پہنچ پا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ آج نوجوانوں کے پاس روزگار نہیں ہے۔ کئی نجی کمپنیاں بند ہو گئیں اور مہنگائی نے عام آدمی کی کمر توڑ دی ہے۔ انہوں نے کہا کہ راجستھان سے ہزاروں لوگ دہلی کی ریلی میں جائیں گے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔