اتر پردیش اور کیرالہ پولیس کو خواتین کمیشن نے جاری کیا نوٹس

خواتین کمیشن نے بتایا کہ کمیشن کی چیئرپرسن نے یو پی کے کانپور میں 23 سالہ لڑکی کی عصمت دری اور قتل کے سلسلے میں یو پی کے ڈائریکٹر جنرل آف پولیس کو خط لکھا ہے اور مکمل جانچ کرنے کو کہا ہے۔

ریکھا شرما، تصویر آئی اے این ایس
ریکھا شرما، تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

نئی دہلی: قومی کمیشن برائے خواتین نے دو الگ الگ معاملات میں کیرالہ اور اتر پردیش پولیس کو نوٹس جاری کئے ہیں اور متعلقہ معاملات میں ایف آئی آر درج کرنے کو کہا ہے۔ خواتین کمیشن نے بدھ کو یہاں بتایا کہ کمیشن کی چیئرپرسن ریکھا شرما نے اتر پردیش کے کانپور میں 23 سالہ لڑکی کی عصمت دری اور قتل کے سلسلے میں اتر پردیش کے ڈائریکٹر جنرل آف پولیس کو ایک خط لکھا ہے اور مکمل جانچ کرنے کو کہا ہے۔

ریکھا شرما نے اس معاملے پر از خود نوٹس لیتے ہوئے کہا کہ اس سلسلے میں فوری طور پر ایف آئی آر درج کی جانی چاہئے اور ملزمین کی گرفتاری کو یقینی بنایا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ پورے معاملے کی جانچ ایک مقررہ مدت کے اندر ہونی چاہیے۔ خط کی ایک کاپی کانپور کے پولیس سپرنٹنڈنٹ کو بھی بھیجی گئی ہے۔ اس لڑکی کی لاش ریلوے لائن کے پاس جھلسی ہوئی حالت میں برآمد ہوئی تھی اور پوسٹ مارٹم رپورٹ میں اس کے ساتھ جنسی زیادتی کی تصدیق ہوئی ہے۔


خواتین کمیشن نے کیرالہ کے ایرناکولم میں ایک خاتون تاجر پر حملے کے معاملے میں بھی از خود نوٹس لیتے ہوئے کیرالہ کے پولیس سربراہ کو ایک خط لکھا ہے۔ ریکھا شرما نے خط میں معاملے پر ایف آئی آر درج کرنے اور ملزم کو فوراََ گرفتار کرنے کو کہا ہے۔ کمیشن نے متاثرہ خاتون اور اس کے اہل خانہ کو طبی امداد اور سیکورٹی فراہم کرنے کی بھی ہدایت دی ہے۔ اس خاتون نے ایرناکولم میں ایک ’غیر حلال‘ ریسٹورنٹ کھولا ہے، جس کے بعد اس پر حملہ کیا گیا ہے۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔