یوگی راج میں قاتل بنا اتر پردیش! این سی آر بی نے قتل معاملہ میں یو پی کو بتایا نمبر وَن

این سی آر بی کے اعداد و شمار نے اترپردیش کی حقیقت کو سامنے لا کر رکھ دیا ہے، ایک طرف قتل کے معاملے میں جہاں ریاست ملک میں پہلے مقام پر ہے، وہیں اغوا کے معاملوں میں بھی حالات فکر انگیز ہیں۔

علامتی تصویر، آئی اے این ایس
علامتی تصویر، آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

اتر پردیش میں یوگی آدتیہ ناتھ کی قیادت والی بی جے پی حکومت بھلے ہی محفوظ ریاست کے دعوے کرے، لیکن قومی جرائم ریکارڈ بیورو (این سی آر بی) نے سچائی پر سے پردہ ہٹا دیا ہے۔ این سی آر بی کے اعداد و شمار کے مطابق قتل کے معاملوں میں اتر پردیش ملک میں سرفہرست ہے۔

پیش کردہ اعداد و شمار کے مطابق ملک میں اوسطاً ہر روز 80 لوگوں کا قتل ہوتا ہے، اس میں سب سے بڑا تعاون بی جے پی حکمراں اتر پردیش کا ہے۔ بدھ کو جاری این سی آر بی کے اعداد و شمار سے سامنے آیا ہے کہ اتر پردیش میں گزشتہ سال یعنی 2020 میں 2019 کے مقابلے زیادہ قتل کے واردات سامنے آئے ہیں۔


این سی آر بی کے ذریعہ پیش کردہ اعداد و شمار کے مطابق اتر پردیش میں 2020 میں سب سے زیادہ 3779 قتل کے معاملے درج ہوئے۔ دوسرے نمبر پر بی جے پی-جنتا دل یو حکمراں ریاست بہار ہے۔ مہاراشٹر اور مدھیہ پردیش کا مقام بالترتیب تیسرا اور چوتھا ہے۔ گویا کہ قتل کے معاملوں میں سرفہرست چار میں سے تین بی جے پی حکمراں ریاستیں ہیں۔ بہر حال، اتر پردیش میں اغوا کے معاملوں میں حالانکہ 2019 کے مقابلے کمی درج کی گئی ہے، لیکن پھر بھی 2020 میں اغوا کے 84 ہزار 805 معاملے درج ہوئے ہیں۔ گویا کہ روزانہ تقریباً 232 اغوا کے معاملے سامنے آ رہے ہیں۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔