’زبان کاٹ دیں گے‘، بی جے پی لیڈر ایشورپا کو ملا دھمکی آمیز خط

ایشورپا کا کہنا ہے کہ ’’میں نے ٹیپو سلطان کو مسلم غنڈہ کہا تھا، اس لیے وہ لوگ میری زبان کاٹ دیں گے، اس سے قبل بھی مجھے دوبئی سے دھمکی آمیز فون آیا تھا۔‘‘

کے ایس ایشورپا، تصویر آئی اے این ایس
کے ایس ایشورپا، تصویر آئی اے این ایس
user

قومی آوازبیورو

کرناٹک میں بی جے پی لیڈر کے ایس ایشورپا کو دھمکی آمیز خط موصول ہوا ہے جس میں ان کی زبان کاٹنے کی بات کہی گئی ہے۔ یہ دھمکی آمیز خط کنڑ زبان میں لکھا گیا ہے اور بذریعہ ڈاک بی جے پی لیڈر کے گھر پہنچا ہے۔ اس خط میں لکھا گیا ہے کہ اگر انھوں نے مزید ایک بار ٹیپو سلطان کو مسلم غنڈہ کہا تو ان کی زبان کاٹ دی جائے گی۔

اس خط کے تعلق سے بی جے پی لیڈر ایشورپا کے پرسنل اسسٹنٹ نے کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ اس کے علاوہ دھمکی آمیز خط کے ساتھ پولیس سپرنٹنڈنٹ کو ایک شکایت بھی دی گئی ہے۔ حالانکہ اس معاملے میں پولیس سپرنٹنڈنٹ بی ایم لکشمی پرساد کا کہنا ہے کہ ’’ہمارے پاس صرف اس معاملے کی جانکاری ملی ہے، ابھی ہم شکایت کا انتظار کر رہے ہیں۔ ہمیں ابھی تک وہ چٹھی نہیں ملی ہے۔‘‘


واضح رہے کہ رواں سال فروری ماہ میں بجرنگ دل کارکن ہرش کا قتل کر دیا گیا تھا۔ اس کے بعد شہر میں فرقہ وارانہ کشیدگی دیکھنے کو ملی تھی۔ اس واقعہ کے خلاف ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے بی جے پی لیڈر کے ایس ایشورپا اکثر ’مسلم غنڈے‘ لفظ کا استعمال کر رہے تھے۔ انھوں نے ٹیپو سلطان کے خلاف بھی بیانات دیئے ہیں۔ دھمکی آمیز خط موصول ہونے کے بعد ایشورپا نے خود بھی کہا کہ ’’میں نے ٹیپو سلطان کو مسلم غنڈہ کہا تھا، اس لیے وہ لوگ میری زبان کاٹ دیں گے۔ اس سے قبل بھی مجھے دوبئی سے دھمکی آمیز فون آیا تھا۔‘‘

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔