’جو رام کو گالی دے رہے تھے، اب انھیں ایودھیا کی یاد آ رہی‘

یو پی کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے کہا کہ کورونا بحران میں یو پی اور بہار کے مزدوروں کو دہلی سے بھگانے والے دہلی کے وزیر اعلی کو انتخابات کے وقت بھگوان رام اور یوپی کے لوگ یاد آرہے ہیں۔

تصویر آئی اے این ایس
تصویر آئی اے این ایس
user

یو این آئی

لکھنؤ: ایودھیا کی مفت یاترا کے اروند کیجریوال کے اعلان پر طنز کستے ہوئے اترپردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے منگل کو کہا کہ کورونا بحران میں اترپردیش اور بہار کے مزدوروں کو دہلی سے بھگانے والے دہلی کے وزیر اعلی کو انتخابات کے وقت بھگوان رام اور یوپی کے لوگ یاد آرہے ہیں۔ بی جے پی کے سماجی نمائندہ سمیلن کوخطاب کرتے ہوئے یوگی نے الزام لگایا کہ کہ کورونا بحران میں لاک ڈاؤں کے دوران 'عآپ' حکومت نے اترپردیش اور بہار کے مزدوروں کو دہلی سے بھگانے کا کام کیا تھا۔ کورونا بحران میں دہلی سنبھال نہیں پائے۔ یوپی اور بہار کے لوگوں کو بھگا دیا گیا اور اب جب انتخابات قریب آرہے ہیں تو انہیں یوپی یاد آرہی ہے۔

وزیر اعلیٰ نے دعوی کیا کہ ' یہ لوگ پہلے رام کو گالی دینے سے بھی نہیں چوکتے تھے مگر آج جب لگ رہا ہے کہ رام کے بغیر نیا پار ہونے والی نہیں ہے تو رام کے درشن کے لئے ایودھیا آرہے ہیں۔ اچھی بات یہ ہے کہ کم سے کم رام کی اہمیت اور وجودی کو انہوں نے قبول تو کیا۔ بصورت دیگر اپوزیش پارٹیوں کا کوئی لیڈر ایسا نہیں ہے جنہوں نے چھ ستمبر 1992 کو کلیان سنگھ کو نہ کوسا ہو۔ لیکن وہ مضبوطی کے ساتھ کھڑے تھے۔


انہوں نے کہا تھا کہ 'اگر کوئی ذمہ داری طے ہوتی ہے تو کلیان سنگھ کی ہونی چاہئے اور یہ ذمہ داری کلیان سنگھ لینے کو تیار ہے۔ اس درمیان یوگی کے بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے کیجریوال نے ٹوئٹ کیا کہ 'دہلی مطلب سب کو مفت دوائی، بہتر تعلیم، بیٹیوں کو سیکورٹی، بزرگوں کا احترام، آج میں نے اعلان کیا ہے کہ دہلی کے لوگوں کو کل سے ایودھیا تیرتھ یاترا مفت کرائیں گے۔ پھر اسے یوپی میں بھی نافذ کریں گے۔ اس اسکیم سے عوام پربھو رام کا درشن کر پائیں گے۔ یوگی جی اس میں آپ کو اعتراض کیوں ہے؟‘‘

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔