دو سے زیادہ بچے پیدا کرنے والوں کو راشن اور دوسری سہولیات سے محروم کر دینا چاہئے: پروین توگڑیا

پروین توگڑیا نے ہفتہ کو کہا کہ تبلیغی جماعت پر پابندی کے ساتھ حکومت کو چاہیے کہ آبادی کنٹرول پر بھی قانون بنائے۔

پروین توگڑیا کی فائل تصویر 
پروین توگڑیا کی فائل تصویر
user

یو این آئی

بدایوں: انتر راشٹریہ ہندو پریشد کے صدر پروین توگڑیا نے ایک بار پر حکومت سے تبلیغی جماعت پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ قصبہ اساواں گاؤں میں میڈیا نمائندوں سے بات چیت میں توگڑیا نے ہفتہ کو کہا کہ تبلیغی جماعت پر پابندی کے ساتھ حکومت کو چاہیے کہ آبادی کنٹرول پر قانون بنائے۔

پروین توگڑیا یہیں نہیں رکے بلکہ انہوں نے کاشی، متھرا معاملے میں قانون بنا کر دونوں مقامات پر مندر کی تعمیر کرنے کے لئے مرکزی حکومت کو نصیحت کی۔ پروین توگڑیا نے کسانوں کی پیدوار کی مناسب قیمت کے لئے کم از کم سہارا قیمت پر قانون بنانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ہندوتوا کی بات کرنا بند کرو اور کام کر کے دکھاؤ۔


انہوں نے مزید کہا کہ قانون ایسا ہونا چاہئے کہ دو سے زیادہ بچے پیدا کرنے والوں کو مفت یا سستا اناج کے علاوہ دیگر سہولیات سے بھی محروم کر دیا جائے۔ مزید برآں اگر ضرورت پڑے تو ایسے افراد سے رائے دہی کا حق سلب کرلیا جائے۔پروین توگڑیا اپنے متنازع بیانات کے ذریعہ سرخیوں میں رہتے ہیں ابھی کچھ دنوں قبل بھی انہوں نے حکومت سے تبلیغی جماعت پر پابندی عائد کرنے کا مطالبہ کیا تھا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔