بُلی بائی ایپ معاملہ: مشتبہ ملزم بنگلورو میں پکڑا گیا، ممبئی پولیس کی کوشش رنگ لائی

ممبئی پولیس نے بلی بائی ایپ معاملہ میں ایک مشتبہ ملزم کو بنگلورو سے حراست میں لیا ہے، ملزم کو ممبئی پولیس پوچھ تاچھ کے لیے ممبئی لے گئی ہے۔

تصویر سوشل میڈیا
تصویر سوشل میڈیا
user

قومی آوازبیورو

ممبئی پولیس نے بُلی بائی ایپ معاملہ میں ایک مشتبہ ملزم کو بنگلورو سے حراست میں لیا ہے۔ ملزم کو ممبئی پولیس پوچھ تاچھ کے لیے ممبئی لے گئی ہے۔ وہ بلی بائی کے پانچ فالوورس میں سے ایک ہے۔ اسے گرفتار کیے جانے کا بھی امکان ہے۔ اس سے قبل مہاراشٹر کے وزیر داخلہ ستیج پاٹل نے پیر کے روز پولیس کو ’بلی بائی‘ ایپ کے ڈیولپرس کے خلاف کارروائی کرنے کی ہدایت دی تھی، جس کے بعد اس معاملے میں یہ پہلی بڑی کارروائی ہے۔ ممبئی پولیس سائبر سیل نے ’بُلی بائی‘ ایپ معاملے میں بنگلورو سے جس 21 سالہ ملزم کو پکڑا ہے، وہ ایک انجینئرنگ طالب علم ہے۔

’بُلی بائی‘ ایپ معاملے میں ممبئی پولیس نے بنگلورو سے حراست میں لیے گئے مشتبہ کی عمر کے علاوہ اس کی شناخت کا انکشاف نہیں کیا ہے۔ پولیس نے نامعلوم جرائم پیشوں کے خلاف تعزیرات ہند کی دفعہ اور آئی ٹی ایکٹ کی متعلقہ دفعات کے تحت معاملہ درج کیا ہے۔


گرفتاری کے بعد مہاراشٹر کے وزیر داخلہ ستیج پاٹل نے کہا کہ ’’ممبئی پولیس کو بڑی کامیابی ملی ہے۔ حالانکہ ہم اس وقت تفصیل بیان نہیں کر سکتے، کیونکہ اس سے چل رہی جانچ میں رخنہ پیدا ہو سکتا ہے۔ میں سبھی متاثرین کو یقین دلانا چاہتا ہوں کہ ہم جرائم پیشوں کا لگاتار پیچھا کر رہے ہیں اور وہ جلد ہی قانون کا سامنا کریں گے۔‘‘

غور طلب ہے کہ تقریباً 100 مسلم خواتین کی مبینہ طور پر نیلامی کی تصویریں اَپ لوڈ کرنے والے ’بلی بائی‘ ایپ پر ہنگامہ برپا ہے۔ صحافیوں، سماجی کارکنان، طالبات اور مشہور ہستیوں سمیت کئی خوتین نے بلی بائی ایپ کے خلاف شکایت کی اور اس کے ڈیولپر کے خلاف سخت کارروائی کا مطالبہ کیا۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔