لکھیم پور کھیری تشدد معاملہ میں سپریم کورٹ نے آشیش مشرا کی عبوری ضمانت کی مدت بڑھائی

گزشتہ سال ستمبر ماہ میں عدالت عظمیٰ نے اس بات پر غور کرتے ہوئے قومی راجدھانی میں رہنے کے لیے آشیش مشرا کی ضمانت سے متعلق شرط میں نرمی دی تھی کہ ان کی ماں دہلی کے اسپتال میں زیر علاج ہیں۔

<div class="paragraphs"><p>سپریم کورٹ آف انڈیا / آئی اے این ایس</p></div>

سپریم کورٹ آف انڈیا / آئی اے این ایس

user

قومی آوازبیورو

سپریم کورٹ نے 2021 کے لکھیم پور کھیری تشدد معاملے میں وزیر مملکت برائے داخلہ اجئے کمار مشرا کے بیٹے آشیش مشرا کو عبوری ضمانت دینے کے اپنے پہلے کے حکم میں پیر کے روز توسیع کرنے کا فیصلہ سنایا۔ جسٹس سوریہ کانت کی صدارت والی بنچ کو 26 ستمبر 2023 کے بعد مقدمے کی حالت سے متعلق کوئی رپورٹ ریکارڈ پر نہیں ملی۔ معاملہ کو ملتوی کرتے ہوئے بنچ نے عدالت عظمیٰ کی رجسٹری کو ٹرائل کورٹ سے اسٹیٹس رپورٹ حاصل کرنے کے لیے کہا اور اس درمیان عبوری ضمانت کی مدت بڑھانے کا حکم دیا۔

قابل ذکر ہے کہ گزشتہ سال ستمبر ماہ میں عدالت عظمیٰ نے اس بات پر غور کرتے ہوئے قومی راجدھانی میں رہنے کے لیے آشیش مشرا کی ضمانت سے متعلق شرط میں نرمی دی تھی کہ ان کی ماں دہلی کے ایک اسپتال میں زیر علاج ہیں اور ان کی بیٹی کو بھی طبی خدمات کی ضرورت ہے۔ حالانکہ اس نے آشیش مشرا سے دہلی میں کسی بھی عوامی تقریب میں حصہ نہیں لینے یا کسی بھی زیر غور مقدمہ کے متعلق میڈیا سے بات چیت نہ کرنے کو کہا۔


واضح رہے کہ جنوری 2023 میں سپریم کورٹ نے مشرا کو عبوری عبوری ضمانت دیتے ہوئے کئی شرطیں لگائی تھیں۔ اس نے فیصلہ سنایا تھا کہ آشیش مشرا کو اپنی رِہائی کے ایک ہفتہ کے اندر اتر پردیش (یوپی) چھوڑنا ہوگا، وہ یوپی یا دہلی/این سی آر میں نہیں رہ سکتا، وہ عدالت کو اپنی جگہ کے بارے میں مطلع کرے گا، اور ان کے کنبہ کے اراکین یا خود آشیش مشرا کے ذریعہ گواہوں کو متاثر کرنے کی کسی بھی کوشش سے ان کی ضمانت رد کر دی جائے گی۔

علاوہ ازیں عدالت نے کہا کہ مشرا کو اپنا پاسپورٹ سرینڈر کرنا ہوگا، مقدمات کی کارروائی میں شامل ہونے کے علاوہ وہ یوپی میں داخل نہیں ہوں گے، اور فریق استغاثہ، ایس آئی ٹی، مخبر یا جرم کے متاثرین کے کنبہ کا کوئی بھی رکن عبوری ضمانت کی رعایت کے غلط استعمال کے کسی بھی واقعہ کے بارے میں عدالت عظمیٰ کو فوراً مطلع کرنے کے لیے آزاد ہوگا۔


غور طلب ہے کہ اکتوبر 2021 میں لکھیم پور کھیری ضلع کے تکونیا میں اس وقت تشدد میں 8 لوگوں کی موت ہو گئی تھی جب کسان اتر پردیش کے نائب وزیر اعلیٰ کیشو پرساد موریہ کے دورے کی مخالفت کر رہے تھے۔ یوپی پولیس کی ایف آئی آر کے مطابق چار کسانوں کو ایک ایس یو وی نے کچل دیا جس میں آشیش مشرا بیٹھے تھے۔

Follow us: Facebook, Twitter, Google News

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل (qaumiawaz@) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔


;